آبدوز میں بھارتی کمانڈوز اور دہشتگرد موجود تھے ،مقصد بلوچستان میں کارروائی کرنا تھا :دفاعی تجزیہ کار

آبدوز میں بھارتی کمانڈوز اور دہشتگرد موجود تھے ،مقصد بلوچستان میں کارروائی ...

اسلام آباد /کراچی (آئی این پی ) دفاعی تجزیہ کاروں نے کہاہے کہ بھارت چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک )کی وجہ سے بہت پریشان ہے اور اس وجہ سے اوٹ پٹانگ حرکتیں کررہاہے ، وہ پاکستان کو کمزور کرنے کیلئے کئی طریقے اپنا رہاہے اور یہ اس کی زندہ مثال ہے، بھارت افغانستان اور پاکستان کے تعلقات میں رخنے ڈال رہا ہے،سب میرین میں بھارتی ایس ایس جی کے لوگ اور دہشگرد تھے،لینڈ کرنے کے بعد بلوچستان میں کارووائی کرنا تھی،کسی کو شک نہیں ہونا چاہیے کہ بھارتی بحریہ کا سارا ٹارگٹ بلوچستان کا ساحل ہے، ان کا مقصدسی پیک کو نقصان پہنچانا تھا آبدوز بھیجنے سے ظاہر ہوتا ہے کہ یہ تینوں فورسز کو دباؤ میں رکھنا چاہتا ہے، پاک بحریہ کی چوکسی نے پاکستان کو ایک بڑے خطرے سے بچا لیا ہے ، بھارت اور پاکستان کے معاملات سیاسی کی نوعیت کے ہیں،فوجی طریقے سے اور ایسی حرکتوں سے معاملات مزیدالجھ جائیں گے۔ جمعہ کو نجی ٹی وی چینلز سے گفتگو میں بھارت کی جانب سے اپنی آبدوز پاکستان کے سمندری علاقے میں بھیجنے کی ناکام کوشش پر تبصرہ کرتے ہوئے کموڈور (ر) عبیداللہ نے کہا کہ پاک بحریہ نے پاکستان کو ایک بڑے خطرے سے بچا لیا ہے،بھارت انتہائی مہلک سب میرین تھی،جو سمندر کی تہہ سے پاکستان کی حدود میں داخل ہونا چاہتی تھی ،سب میرین میں بھارتی ایس ایس جی کے لوگ اور دہشگرد تھے،لینڈ کرنے کے بعد بلوچستان میں کارووائی کرنا تھی،کسی کو شک نہیں ہونا چاہیے کہ انڈین نیوی کا سارا ٹارگٹ بلوچستان کوسٹ ہے۔انہوں نے یہ سمجھا کہ یہ لوگ خاموش بیٹھے ہوں گے، ان کا مقصدسی پیک کو نقصان پہنچانا تھا،انہوں نے سمجھا تھا کہ پاکستان کو اس سے نقصان پہنچائیں گے ،مگر ہماری نیوی نے ان کو ناک سے پکڑ کر ان کو وہاں چھوڑا جہاں سے وہ تعلق رکھتے ہیں۔ لیفٹیننٹ جنرل (ر)طلعت مسعود نے کہا کہ بھارت جو حرکتیں کر رہا ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ یہ تینوں فورسز کو دباؤ میں رکھنا چاہتا ہے،بھارت پاکستان کو کمزور کرنے کیلئے کئی طریقے اپنا رہاہے اور یہ اس کی زندہ مثال ہے،سی پیک کی وجہ سے بھارت بڑا پریشان ہے اور افغانستان اور پاکستان کے تعلقات میں رخنے ڈال رہا ہے۔جمعہ کو لیفٹیننٹ جنرل (ر) طلعت مسعود نجی ٹی وی سے گفتگو کر رہے تھے۔انہوں نے کہاکہ بھارت جو حرکتیں کر رہا ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ یہ تینوں فورسز کو دباؤ میں رکھنا چاہتا ہے،لائن آف کنٹرول پران کی جارحانہ کارروائیاں جاری ہیں اسی طرح یہ بھی جارحانہ کارروائی ہی ہے،سمندر میں جارحانہ کارووائی کے کئی مقاصد ہیں وہ جاننا چاہتے ہیں کہ پاکستان کا دفاع کس حد تک محفوظ ہے،بھارت پاکستان کو کمزور کرنے کیلئے کئی طریقے اپنا رہاہے،یہ اس کی زندہ مثال ہے، بھارت اور پاکستان کے معاملات سیاسی کی نوعیت کے ہیں،فوجی طریقے سے اور ایسی حرکتوں سے معاملات مزیدالجھ جائیں گے،سی پیک کی وجہ سے بھارت بڑا پریشان ہے اور افغانستان اور پاکستان کے تعلقات میں رخنے ڈال رہا ہے اور افغانستان کی سرزمین استعمال کر رہا ہے۔

مزید : صفحہ اول