افغان مسئلے کا حل طالبان کیساتھ مذاکرات ہیں ،عالمی برادری مفاہمی عمل میں کردار ادا کرے :ملیحہ لودھی

افغان مسئلے کا حل طالبان کیساتھ مذاکرات ہیں ،عالمی برادری مفاہمی عمل میں ...

نیویارک (اے این این ) اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی نے کہا ہے کہ افغان مسئلے کا حل طالبان کے ساتھ مذاکرات ہیں ،عالمی برادری مفاہمی عمل میں کردار ادا کرے ، افغان جنگ کے پاکستان کی معاشی ترقی پر بھی اثرات مرتب ہوئے،افغان مہاجرین کی باعزت واپسی چاہتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں افغانستان سے متعلق مباحثے میں حصہ لیتے ہوئے کیا۔انھوں نے کہا کہ افغانستان میں قیام امن کیلئے افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات ضروری ہیں تاہم مفاہمتی عمل کیلئے عالمی برادری کو بھی کردار ادا کرنا ہو گا۔انہوں نے کہاکہ گزشتہ تیس سال سے زائد کے عرصے کے دوران افغان جنگ کے باعث پاکستان کو سلامتی، استحکا م اوراقتصادی ترقی پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ افغان جنگ کے پاکستان کی معاشی ترقی پر بھی اثرات مرتب ہوئے۔ دونوں ملکوں کے لوگوں کے درمیان صدیوں پرانے تعلقات ہیں اور ان کی اقدار ایک دوسرے سے جڑی ہیں۔ پاکستان کئی دہائیوں سے افغان عوام کی مدد کر رہا ہے۔ ملیحہ لودھی نے کہا کہ افغان مہاجرین کی 30 سال سے زائد عرصے سے میزبانی کر رہے ہیں۔ پاکستان چاہتا ہے کہ مہاجرین باعزت طریقے سے واپس جائیں اور اپنے گھروں میں آباد ہوں۔انھوں نے کہا کہ پاکستان نے افغانستان میں قیام امن میں اہم کردار ادا کیا ہے جس کااعتراف عالمی برادری نے بھی کیا ہے۔

مزید : صفحہ اول