کنڑیکٹ لیب ٹیکنالوجسٹس کوپنشن اور دیگر مراعات نہ ملنے پر عدالت کا اظہار ناراضگی

کنڑیکٹ لیب ٹیکنالوجسٹس کوپنشن اور دیگر مراعات نہ ملنے پر عدالت کا اظہار ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے قرار دیا ہے کہ ملک میں بادشاہت کا راج ہے ،عدالتیںآئین اور قوانین کو نظر انداز کر کے شہریوں کے حقوق غضب کرنے کی اجازت نہیں دے سکتیں۔مسٹرجسٹس محمد فرخ عرفان خان نے یہ ریمارکس سردار سنتوک سنگھ وغیرہ کی درخواست پر حکومت سے جواب طلب کرتے ہوئے دیئے ،درخواست گزاروں کی طرف سے موقف اختیار کیا گیاہے کہ گریڈ 14اور 16 کے کنڑیکٹ لیب ٹیکنالوجسٹس کومستقل ہونے کے باجود پینشن اور دیگر مراعات نہیں دی جا رہیں۔انہوں نے کہا کہ آئین کے تحت کسی بھی شہری سے امتیازی سلوک نہیں برتا جاسکتا مگر اس کے باوجود محکمہ صحت سے وابستہ لیب ٹیکنالوجسٹس کو پینشن اور دیگر مراعات سے محروم رکھا گیا ہے جس پر عدالت نے ریمارکس دئیے کہ ملک میں بادشاہت کا راج ہے ،بادی النظر میں ادارے ماورائے آئین اقدامات کے ذریعے شہریوں کے حقوق کو غضب کر رہے ہیں جسے عدالیں برداشت نہیں کر سکتیں۔عدالت نے حکومت پنجاب کو2 سمبر کے لئے نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیاہے۔

مزید : صفحہ آخر