پولیس ملازمین کا ڈاکٹروں پر عدم اعتماد،حکیموں سے علاج کا فیصلہ

پولیس ملازمین کا ڈاکٹروں پر عدم اعتماد،حکیموں سے علاج کا فیصلہ

لاہور(وقائع نگار)تھانہ کلچر کو تبدیل کرنے کے دعوؤں کے باوجود پولیس ملازمین کے معیار زندگی کوبلندنہیں کیا جا سکا جس کی بنیادی وجہ ان کی ضعیف العتقاد ی ہے۔پولیس اہلکار اب بھی بیماری کی صورت میں حکماء سے رابطہ کرتے ہیں اور ہسپتالوں میں ان کے لئے فراہم کی جانے والی سہولیات سے فائدہ نہیں اٹھاتے۔اس صورتحال کے باعث ڈسٹرکٹ سطح پر حکیموں کو پولیس کے علاج معالجہ کی غرض سے ادائیگیوں کے بارے فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق محکمہ پولیس کی جانب سے اہلکاروں کو جو میڈیکل الاؤنس اور سہولیات دستیاب ہیں وہ ان کا استعمال نہیں کرتے اور حکیموں سے علاج کروانے کو ترجیح دیتے ہیں جس کے باعث محکمہ پولیس میں حکیموں کو رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ذرائع کے مطابق حکماء کو ان ڈسٹرکٹس میں تعینات کیا جائے گا جہاں ایسے اہلکار موجود ہوں گے جو ایلو پیتھک ادویات کو استعمال کرنے کی بجائے حکیم کی دوائیوں کو استعمال کرنا ترجیح دیتے ہیں ۔ تاحال اس پوسٹ پر کسی بھی حکیم کی ابھی تک بھرتی نہیں ہوئی ہے۔

علاج کا فیصلہ

مزید : صفحہ آخر