سپریم کورٹ ،سزائے موت کے مجرم کی ذہنی حالت جانچنے کیلئے میڈیکل بورڈ تشکیل

سپریم کورٹ ،سزائے موت کے مجرم کی ذہنی حالت جانچنے کیلئے میڈیکل بورڈ تشکیل

اسلام آباد ( اے این این ) سپریم کورٹ نے سزائے موت کے مجرم امداد علی کی ذہنی حالت کی جانچ کے لیے میڈیکل بورڈ تشکیل دے دیا ٗ میجر جنرل سلیم جہانگیر میڈیکل بورڈ کے سربراہ ہونگے ٗ دو ہفتوں میں رپورٹ جمع کرانے کا حکم ۔ جمعہ کو چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے ذہنی مریض امداد علی کی پھانسی کے خلاف اپیل پر سماعت کی۔سماعت کے دوران عدالت نے امداد علی کی ذہنی حالت جانچنے کے لیے میڈیکل بورڈ تشکیل دے دیا، جس کے سربراہ میجر جنرل سلیم جہانگیر ہوں گے، میڈیکل بورڈ کو 2 ہفتوں میں رپورٹ جمع کروانے کی ہدایت کی گئی ہے۔یاد رہے کہ 14 نومبر کو مذکورہ کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے امداد علی کی ذہنی حالت جانچنے کے لیے میڈیکل بورڈ تشکیل دینے کی درخواست منظور کرتے ہوئے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب سے 5 ماہرِ ذہنی امراض کے نام طلب کیے تھے، جس کے بعد 16 نومبر کو اس حوالے سے 10 نام عدالت عظمی میں جمع کرائے گئے تھے۔سماعت کے دوران عدالت عظمی کا کہنا تھا کہ ٹرائل کورٹ اور ہائی کورٹ نے امداد حسین کی ذہنی حالت کے جائزے کی درخواستیں مسترد کردیں، مکمل انصاف کے لیے عدالت آرٹیکل 187 کا استعمال کرسکتی ہے۔اس موقع پر جسٹس اعجاز الحسن نے ریمارکس دیئے کہ اگر بورڈ کہہ دیتا ہے کہ امداد حسین کی ذہنی حالت درست نہیں تو مناسب فیصلہ دیں گے۔جبکہ جسٹس امیر ہانی مسلم کا کہنا تھا کہ میڈیکل جائزے سے سزا ختم نہیں ہوگی اور جب امداد علی کی ذہنی حالت ٹھیک ہوگی تو اسے پھانسی گھاٹ پر آنا ہوگا۔بعدازاں کیس کی سماعت غیرمعینہ مدت کے لیے ملتوی کردی گئی۔

سزائے موت

مزید : صفحہ آخر