ذلت اور رسوائی تحریک انصاف کا ہمیشہ کیلئے مقدر بن چکی ہے: ایاز صادق

ذلت اور رسوائی تحریک انصاف کا ہمیشہ کیلئے مقدر بن چکی ہے: ایاز صادق

لاہور (آئی این پی)سپیکرقومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے کہا ہے کہ تحریک انصاف وزیر اعظم اور انکی فیملی پر ذاتی عنا کی وجہ جھوٹے الزامات لگا رہی ہے‘عمران خان اور تحر یک انصاف کے پاس پانامہ لیکس کیس میں کسی قسم کا ثبوت یا شواہدنہیں ‘ زلت اور رسوائی تحر یک انصاف کا ہمیشہ کیلئے مقدر بن چکی ہے ‘ انسانی حقوق صرف انگزیروں کیلئے ہیں ’گولڈن ٹمپل پر حملے اور کشمیریوں پر بھارتی مظالم پر انسانی حقو ق کی تنظیم خاموش کیوں ہیں ؟کشمیری اور سکھ دونوں بھارت سے آزادی چاہتے ہیں ‘ سکھ قوم کشمیر میں مسلمانوں کا ساتھ دے ہم مسلمان آپکا ساتھ کبھی نہیں چھوڑیں گے ‘بھارت کی جانب سے کشمیر میں مسلسل کرفیو اور مسلمانوں پر مذہبی پابندیا ں قابل مذمت ہیں ،مسئلہ کشمیر کو اقوام متحد ہ کی قرار دادوں کے مطابق جلد از جلد حل کیا جائے ‘ بابا گورو نانک اور حضرت میاں میر کے قائم کیے گئے رشتے کو مزید مضبوط بنانا چاہیے ان خیلات کا اظہار انہوں نے دیال سنگھ ریسرچ فورم کے زیر اہتمام حضوری باغ میں منعقدہ ہ سمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے مزید کہاکہ بابا وگرو نانک کا نام ہمیشہ زندہ رہے گا اور انکی انسانیت اور امن اور بھائی چارے لیے خدمات قابل تعریف ہیں ،گولڈن ٹیمپل کے سانحہ میں بھارتی حکومت ملوث تھی اور مسلمانوں کے قتل عام میں مودی سرکار ملوث ہے ،بھارت کے بذلانہ اقدامات دنیا میں شرمندگی کا باعث ہیں انہوں نے کہا کہ پیار سے تو کسی کو بھی جیتا جا سکتا ہے نفرت سے نہیں۔بابا گورو نانک جی کے نام کو مزید عزت دینے کے لیے حکومت پاکستان اور صدیق الفاورق کی جانب سے بابا گورو نانکی انٹرنیشنل یونیورسٹی کا قیام ایک تاریخ ساز عمل ہے جس پوری دنیا پزیرائی مل رہی ہے بعد ازاں میڈیا کے نمائندوں گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ تحریک انصاف وزیر اعظم اور انکی فیملی پر ذاتی عنا کی وجہ جھوٹے الزامات لگا رہی ہے‘عمران خان اور تحر یک انصاف کے پاس پانامہ لیکس کیس میں کوئی کسی قسم کا ثبوت یا شواہد نہ ہیں ‘زلت اور رسوائی تحر یک انصاف کا ہمیشہ کیلئے مقدر بن چکی ہے چیئرمین متروکہ وقف املاک بورڈ محمد صدیق الفاورق نے کہا کہ بھارت انسانیت کی بنیاد پر مسئلہ کشمیر کے حل کرنے کے لیے مذاکرات کرے۔سکھ قوم کشمیر کا مسئلہ حل کرنے کے لیے آگے بڑھے ،ہم جتنی عزت سکھوں کو پاکستان میں دیتے ہیں اتنی قدر بھارت میں بھی ہو ،انہوں نے سکھ قوم کو نانک شاہی کیلنڈر پر اتفاق کرتے ہوئے ایک پلیٹ فارم پر اکھٹا ہونے کی دعوت دی۔

مزید : صفحہ آخر