انگریزوں کو گزرے دہائیاں گزر گئیں، انگلش بابو کلچر برداشت نہیں کیا جا سکتا: ہائیکورٹ

انگریزوں کو گزرے دہائیاں گزر گئیں، انگلش بابو کلچر برداشت نہیں کیا جا سکتا: ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس شجاعت علی خان نے گنگا رام اور سروسز ہسپتال کے بعض ملازمین کو مستقل کرنے کے حوالے سے دئیے گئے احکامات نظر انداز کرنے پر سیکرٹری صحت پنجاب کوطلب کر لیا،عدالت نے سی سی پی او لاہور کو عدالتی احکامات پر عمل درآمد کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ انگریزوں کو اس خطے سے گئے کئی دہائیاں گزر گئیں مگر انگلش بابو کا کلچر ختم نہیں ہو سکا جسے برداشت نہیں کیا جا سکتا۔درخواست گزاروں کے وکیل نے موقف اختیار کیاکہ عدالتی احکامات کے باوجود گنگا رام اور سروسز ہسپتال میں 2003کے بعد مستقل ہونے والے جونئیر کلرکس اور اسسٹنٹس کو پینشن اور دیگر مراعات سے محروم رکھ کر امتیازی سلوک برتا جارہا ہے۔ایڈیشنل سیکرٹری صحت پنجاب سلمان شاہد نے عدالت میں تحریری جواب داخل کرنے کی استدعا کی جس پر عدالت نے سخت اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ سیکرٹری صحت ذاتی حیثیت میں عدالت میں پیش ہوں،عدالت نے سی سی پی او لاہور کو عدالتی احکامات پر عمل درآمد کی ہدایت کرتے ہوئے ریمارکس دئیے کہ انگلش بابو کے کلچر نہیں چلنے دیا جائے گا،انگریزوں کو خطے سے گئے کئی دہائیاں گزر گئیں مگر انگلش بابو نے اپنے روئیوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی۔عدالت نے کیس کی مزید سماعت 25نومبر تک ملتوی کر دی۔

انگریزوں کو گزرے

مزید : صفحہ آخر