2300سکولوں کی مخدوش عمارتیں،اسمبلی میں تحریک التواء جمع

2300سکولوں کی مخدوش عمارتیں،اسمبلی میں تحریک التواء جمع

لاہور(نمائندہ خصوصی) لاہور سمیت پنجاب بھر میں 2300 سرکاری سکولوں کی عمارتیں مخدوش ہونے کے خلاف پنجاب اسمبلی میں تحریک التوا جمع کروادی گئی یہ تحریک التوا تحریک انصاف کے ملک تیمور مسعود کی جانب سے جمع کروائی گئی ہے جس کے متن میں کہا گیا ہے کہ سکولوں کی عمارتیں مخدوش ہونے سے طلبہ غیر محفوظ ہیں ان سکولوں کے لیے فنڈز تو جاری ہوئے مگر تعمیرو مرمت نہ ہوسکی 36 اضلاع کی 915 سکولوں کی عمارتیں مکمل طور پر مخدوش ہیں جبکہ 1886 سکولوں کی عمارتوں کو معمولی مخدوش قرار دیا گیا متعلقہ محکمہ کی عدم دلچسپی سے طلبہ کی زندگیاں داؤ پر شکستہ حال عمارتوں میں طلبہ کو کسی بھی وقت ناگہانی صورتحال کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے والدین اور طلبہ میں اس حوالے سے خوف و ہراس پایا جاتا ہے انکا حکومت سے مطالبہ ہے کہ وہ اس صورتحال کا فوری نوٹس لے۔ دریں اثناء ماحول کو محفوظ رکھنے کے لیے خیبرپختونخوا ہ کی طرز پر بلین ٹری منصوبہ شروع کرنے کے لیے ایک قرارداد بھی پنجاب اسمبلی میں جمع کروائی گئی ہے یہ قرارداد ڈپٹی اپوزیشن لیڈر محمد سبطین خان کی جانب سے جمع کروائی گئی ہے اس کے متن میں کہا گیا ہے کہ ماہرین ارضیات کے مطابق کسی بھی ملک کے 25 فیصد رقبے پر جنگلات کا ہونا ضروری ہے پنجاب میں درختوں کو سڑکوں،ایندھن اور عمارتی لکڑی کے لیے جاتا جارہا ہے جس سے ماحولیاتی آلودگی اور چرندوں،پرندوں کے قدرتی مسکن متاثر ہورہے ہیں درختوں کی کٹائی سے زمینی کٹاؤ بھی بڑھ رہا ہے جس سے نشیبی علاقوں میں سیلاب کے خطرات بڑھ گئے ہیں ۔

تحریک التو

مزید : میٹروپولیٹن 1