خیبر پختونخوا کے وزیر جمشید الدین سے تلخ کلامی کرنے والے اسسٹنٹ کمشنر کا تبادلہ کر دیا گیا

خیبر پختونخوا کے وزیر جمشید الدین سے تلخ کلامی کرنے والے اسسٹنٹ کمشنر کا ...
خیبر پختونخوا کے وزیر جمشید الدین سے تلخ کلامی کرنے والے اسسٹنٹ کمشنر کا تبادلہ کر دیا گیا

  


پشاور (ڈیلی پاکستان آن لائن) خیبر پختونخوا کے ضلع نوشہرہ میں تجاوزت کے خلاف آپریشن کے دوران صوبائی وزیر سے تلخ کلامی کرنے والے اسسٹنٹ کمشنر کو تبدیل کردیا گیا ہے، صوبائی وزیر نے اسسٹنٹ کمشنر کو آپریشن روکنے کے احکامات دئیے تھے جس کے جواب میں اسسٹنٹ کمشنر کا کہنا تھا کہ آپ مجھے تنخوا نہیں دیتے ، نوٹس دے کر قانونی کام کر رہا ہوں ، اس لئے آپ اس آپریشن کو روک نہیں سکتے۔

وزیر اعظم کی کراچی آمد ، گورنر سندھ نے استقبال کیا

تفصیلات کے مطابق نوشہرہ میں دریائے کابل پر جی ٹی روڈ کے دونوں اطراف میں غیرقانونی تجاوزات کے خلاف آپریشن جاری تھا کہ اس دوران صوبائی وزیر میاں جمشید الدین کاکا خیل آپریشن کے مقام پر پہنچ گئے اور اہلکاروں کو آپریشن روکنے کا حکم دیا ، اس دوران اسسٹنٹ کمشنر نے انہیں کہا کہ وہ قانونی انداز میں کام کر رہے ہیں اور انہوں نے آپریشن سے قبل دکانداروں کو نوٹسز بھی بھجوائے تھے۔ ان کے اس جواب میں صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ جو بھی ہو میں آپ کا افسر ہوں اور آپ کو حکم دیتا ہوں کہ آپریشن فوری طور پر روک دیں ۔اسسٹنٹ کمشنر نے صوبائی وزیر کا حکم ماننے سے انکار کردیا کہ میں صوبائی حکومت کا ملازم ہوں اور اسی سے تنخواہ لیتا ہوں ۔

صوبائی وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن اور اسسٹنٹ کمشنر نوشہرہ کے درمیان اس وقت شدید گرما گرمی ہوگئی جب صوبائی وزیر نے کہا کہ تمھارے سامنے صوبائی وزیر کھڑا ہے اور میں تمھیں بتا دوں گا ، تمھیں اس عمل کے نتائج بھگتنا ہوں گے۔ اس گرما گرمی کے بعد اب حکومت نے اسسٹنٹ کمشنر کے تبادلے کے احکامات جاری کر دئیے ہیں۔

ویڈیو دیکھیں:

مزید : پشاور