معیار تعلیم کی بہتری کیلئے دنیا میں ڈیجیٹل تبدیلی آرہی ہے،جبران جمشید

معیار تعلیم کی بہتری کیلئے دنیا میں ڈیجیٹل تبدیلی آرہی ہے،جبران جمشید

  



 لاہور (سٹی رپورٹر)معیار تعلیم کو بہتر بنانے کے لیے اب پوری دنیا میں ڈیجیٹل تبدیلی آ رہی ہے جس کی وجہ سے تعلیم کو مکمل  طور پر انقلابی دور میں تیزی سے قدم بڑھانے کا موقع مل گیا ہے۔ان خیالات کا اظہار مائیکرو سافٹ کنٹری ایجوکیشن لیڈ فار پاکستان جبران جمشید نے کیا۔انہوں نے کہا کہ اس علاقے میں برسوں سے تعلیم کی عمومی سطح مسلسل بہتر ہوتی رہی ہے۔ورلڈ بینک کے مطابق مشرق وسطیٰ اور شمالی افریقا کے علاقے (MENA) میں 1960 کے بعد سے اسکول جانے والے بچوں کی اوسط سطح میں چار گنا اضافہ ہوا ہے جس کے باعث خواندگی کی شرح تقریباً دوگنی ہو گئی ہے۔اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ بچوں کے اسکولوں میں اندراج کی شرح میں بہت اضافہ ہوا ہے۔مگر اس ترقی کے باوجود اس پورے علاقے کے عمومی تعلیمی معیار میں کافی فرق ہے بہت سے ملک ابھی تک اس سطح پر نہیں پہنچ پائے جس کی انھیں خواہش ہے۔

مثال کے طور پر خلیج کے علاقے میں صرف29 فیصد آجر محسوس کرتے ہیں کہ موجودہ تعلیمی نظام طلبہ کو ان درست فنی صلاحیتوں سے آراستہ کرتا ہے جو ان کے کام کاج کے لیے ضروری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تحقیق سے ظاہر ہوتا ہے کہ درحقیقت بہت سی صورتوں میں موجودہ نصاب ایسی تعلیم کے بارے میں سوچ کی حمایت کرتا ہے جس کی بنیاد فرسودہ طریقوں پر ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ طلبہ ٹیم میں شامل ہو کر کام کرنے،مسائل سے نبرد آزما ہونے اور جدت طرازی جیسی 21 ویں صدی کی صلاحیتوں سے روشناس نہیں ہو پاتے۔ہنر اور صلاحیت کی اہمیت اب بہت زیادہ ہو رہی ہے

مزید : میٹروپولیٹن 1