22 نومبر کو ڈیرہ میں آزادی کشمیر مارچ، بڑے پیمانے پر تیاریاں شروع

    22 نومبر کو ڈیرہ میں آزادی کشمیر مارچ، بڑے پیمانے پر تیاریاں شروع

  



ڈیرہ غازیخان. (سٹی رپورٹر)72سال میں مسئلہ کشمیر اس وقت بدترین ترین سطح پر ہے مدعی پاکستان اور عالمی دنیا خاموش یو این او کی قراردادوں کو بھی پس پشت ڈال دیا گیا ہے جماعت اسلامی عالمی دنیا اور پاکستان میں مسئلہ کشمیر کو اٹھا رہی ہے مظلوم کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہے 22نومبر کو اپنے مرکزی رہنما سینیٹر سراج الحق کی قیادت میں ڈیرہ غازی خان میں تاریخی آزادی کشمیر مارچ کریں گے نئے سروے (بقیہ نمبر11صفحہ12پر)

کے مطابق پاکستان کے 53 فیصد عوام اس وقت مہنگائی بے روزگاری ملک کا سب سے بڑا مسئلہ سمجھتے ہیں تبدیلی سرکار میں کرپشن بڑھ گئی آج عالمی سطح پر پاکستان تنہا کھڑا ہے نااہل حکمرانوں سے ملک چل نہیں پا رہا مہنگائی بیروزگاری آئین پر عمل درآمد پاکستان کو مسائل کے دلدل سے نکالنے کے لیے ایک قومی ایجنڈے کی ضرورت ہے ملک کو انتشار سے بچانا چاہتے ہیں ان خیالات کا اظہار جماعت اسلامی کے مرکزی ڈپٹی جنرل سیکرٹری اظہراقبال حسن نے جماعت اسلامی ضلعی آفس میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا اس موقع پر امیر جماعت اسلامی جاوید اقبال بلوچ مرکزی رہنما شیخ عثمان فاروق غنا محمد گجر منیر احمد کلاچی ڈاکٹر اشرف بزدار شیخ عبدالستار بھی موجود تھیاظہر اقبال حسن نے کہا22 نومبر کو ڈیرہ غازی خان میں سینیٹر سراج الحق کی قیادت میں تاریخی آزادی کشمیر مارچ کریں گے انہوں نے کہا کہ کشمیر پر سودا بازی نہیں کرنے دیں گے اس وقت عالمی دنیا میں حکومت کی ناکام خارجہ پالیسی سے پاکستان تنہا کھڑا ہے عالمی دنیا مسئلہ کشمیر پر خاموش جبکہ حکومت کشمیر کا مقدمہ نہیں لڑ رہی جان بوجھ کر مسئلہ کشمیر کو نظرانداز کیا جارہا ہے انہوں نے کہا ملک میں مہنگائی بے روزگاری عروج پر ہے ملک میں کرپشن پہلے سے بڑھ گئی روزانہ 12 ارب کی کرپشن ہو رہی ہے حکمرانوں کی نالائقی سے سی پیک معاہدہ بھی پس پست ڈال دیا گیامسئلہ کشمیر سے سودا بازی نہیں ہونے دیں گے اسمبلیوں سینیٹ سب جگہ مسئلہ کشمیر کو اجاگر کریں گے۔

تیاریاں

مزید : ملتان صفحہ آخر