سرحد پار سمگلنگ پر نظر،روک تھام،کسٹم،سکیورٹی فورسز کے نئے دستے تشکیل دینے کا فیصلہ

  سرحد پار سمگلنگ پر نظر،روک تھام،کسٹم،سکیورٹی فورسز کے نئے دستے تشکیل دینے ...

  



اسلام آباد (این این آئی)وفاقی حکومت نے بارڈر مانیٹرنگ انیشی ایٹو کے تحت سرحد پار سمگلنگ پر نظر رکھنے کیلئے اعلیٰ تکنیکی مہارتوں سے لیس کسٹم اور پیرا ملٹری فورس کے دستے تشکیل دینے کا فیصلہ کرلیا۔اس بارے میں ایک سینئر حکومتی عہدیدار نے نجی ٹی وی کو بتایا گلگت بلتستا ن اسکاؤٹ اور پاکستان کوسٹ گارڈ کے دو اضافی دستوں کیساتھ وزیراعظم عمران خان نے دو ہزار سے زائد اہلکاروں کو بھرتی کرنیکی منظوری دی ہے،مذکورہ بھرتیاں متعلقہ سکیورٹی اداروں سے سخت سکیورٹی کلیئرنس ملنے کے بعد کی جائیں گی۔اس سلسلے میں ابتدائی 2 برس کیلئے پاکستا ن کسٹم کو اہم کردار دیا گیا ہے، جس میں انہیں جدید ٹیکنالوجی کے حامل آلات، لاجسٹک سپورٹ، ہتھیاروں سے لیس کیا جائے گا۔ وزیر اعظم عمران خان نے کسٹم کی سرگرمیوں میں معاونت کیلئے ڈائریکٹریٹ جنرل آف لاء اور پراسیکیوشن قائم کرنے کا بھی حکم دیا ہے۔علاوہ ازیں شہدا پیکیج کے تحت پولیس اور پیرا ملٹری اہلکاروں کے اہلِ خانہ کو معاوضے کی ادائیگی کا سلسلہ پاکستان کسٹم آفیسرز اور حکام تک وسیع کردیا گیا ہے جو فرض کی راہ میں زندگی ہار گئے۔بی ایم آئی میں بہتر بارڈر مانیٹرنگ سہولیات بھی شامل ہیں، جس کی لاگت صرف بلوچستان کیلئے 52 ارب روپے ہے جہاں مسلح افواج کا اہم کردار ہے۔

فورس نئے دستے 

مزید : صفحہ آخر