پنجاب اسمبلی،سرکاری کارروائی کیخلاف اپوزیشن کا واک آؤٹ،پانچ آرڈیننس میں 90روز کی توسیع

پنجاب اسمبلی،سرکاری کارروائی کیخلاف اپوزیشن کا واک آؤٹ،پانچ آرڈیننس میں ...

  



لاہور(نمائندہ خصوصی) پنجاب اسمبلی میں سرکاری کارروائی کے خلاف بھرپو احتجاج کرتے ہوئے اپوزیشن احتجاجاً ایوان سے واک آؤٹ کر گئی جبکہ حکومت نے پانچ آرڈیننس کی مدت میں مزید 90 روز کی توسیع حاصل کر لی،تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی کا اجلاس حسب روایت 1 گھنٹہ اور 37منٹ کی تاخیر سے شروع ہوا۔ اجلاس کی صدارت ڈپٹی سپیکر سردار دوست محمد مزاری نے کی۔ اپوزیشن نے کہا کہ محکمہ جنگلات کے پارلیمانی سیکرٹری تسلی بخش جواب نہیں دے پا رہے سوال چنا اور جواب گندم دیا جارہاہے، محکمہ ایوان میں غلط جوابات دے رہاہے سوالات کو کمیٹی میں بھیجا جائے، صہیب بھرت نے کہا کہ غلط سوالات کے جوابات دینے پر پارلیمانی سیکرٹری برائے جنگلات کے خلاف تحریک استحقاق لائیں گے۔اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کی ایوان میں آمد کے موقع پر لیگی ارکان نے شیر آیا شیر آیا کے نعرے لگاتے ہوئے سیٹوں پر کھڑے ہوکر استقبال کیا۔اجلاس میں صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے کہا کہ ہم جو بھی آرڈیننس لارہے ہیں وہ قانون کے تحت لا رہے ہیں کوئی بھی غیر آئینی قانون سازی نہیں کررہے ہیں لوکل گورنمنٹ کے حوالے سے الیکشن کمیشن سے رجوع کیا چند ایک تکنیکی غلطیاں بتائیں لوکل گورنمنٹ بل عدالت میں چیلنج ہواہے الیکشن کمیشن نے کہاکہ غلطیاں دور کرنے کے بعد رائے دیں گے لوکل گورنمنٹ بل آئین و قانون کے مطابق قانون سازی کی اور بعد میں اسی قانون کے تحت الیکشن بھی کروائیں گے۔حکومت نے پنجاب ایگری کلچرل مارکیٹنگ اٹھارٹی ' پنجاب لوکل گورنمنٹ اور پنجاب ویلج اینڈ نیبر ہڈ کونسل کے آرڈیننس کی بھی منظوری حاصل کر لی گئی۔حکومت نے مسودہ قانون (ترمیم)مالیہ اراضی پنجاب 2019ء، مسودہ قانون (ترمیم)زکوتہ و عشر پنجاب2019، مسودہ قانون(مدارس و سکولز)ختم اور بند کئے گئے ادارے پنجاب 2019ء منظور کر لئے۔اجلاس میں چڑیا گھر میں سال 2017، 2018 میں جانوروں کی ہلاکت کی رپورٹ ایوان میں پیش کی گئی یہ رپورٹ محکمہ جنگلی حیات کی جانب سے پیش کی گئی۔قبل ازیں سپیکر چودھری پرویز الٰہی سے ملک ندیم کامران اور سمیع اللہ خان پر مشتمل مسلم لیگ(ن) کے وفد نے حمزہ شہباز اور سلمان رفیق کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے پر سپیکر کا شکریہ ادا کیاجبکہ لیگی وفد نے قائمہ کمیٹیوں سے دئے گئے اپنے استعفوں بارے میں تحفظات سے بھی سپیکر کو آگاہ کیا۔اس موقع پر سپیکر پنجاب اسمبلی نے لیگی وفد کو سیاسی معاملات کو سیاسی انداز میں حل کرنے کا مشورہ دیااور کہا کہ پارلیمانی معاملات میں حکومت اور اپوزیشن کو ساتھ لے کر چلیں گے۔علاوہ ازیں سپیکر چیمبر میں سپیکر چودھری پرویز الٰہی کی زیر صدارت بزنس ایڈوائزری کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس میں مسلم لیگ(ن) کے ملک ندیم کامران اور سمیع اللہ خان نے شرکت کی جبکہ حکومت کی جانب سے اجلاس میں وزیر قانون راجا بشارت اور ڈپٹی سپیکر دوست محمد مزاری بھی شریک ہوئے۔

پنجاب اسمبلی

مزید : صفحہ آخر