شاہد خاقان کے پروڈکشن آرڈر جاری نہ کرنے کیخلاف دائر درخواست پر سماعت دو رکنی احتساب بنچ میں پیش کرنے کی ہدایت

شاہد خاقان کے پروڈکشن آرڈر جاری نہ کرنے کیخلاف دائر درخواست پر سماعت دو رکنی ...

  



لاہور (نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس علی باقرنجفی نے پروڈکشن آرڈر جاری نہ کرنے کے خلاف دائر سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی درخواست مزید سماعت کے لئے لاہور ہائی کورٹ کے دو رکنی احتساب بنچ میں پیش کرنے کی ہدایت کردی۔فاضل جج نے عدالت عالیہ کے دفتر کو کیس آئندہ ہفتے دورکنی بنچ میں سماعت کے لئے مقررکرنے کی ہدایت کی ہے،گزشتہ روز سرکاری وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ درخواست گزار کے خلاف کیس نیب میں چل رہے ہیں لیکن درخواست میں نیب کو فریق نہیں بنایا گیا، سرکاری وکیل نے مزید کہا کہ یہ درخواست عدالت عالیہ کے احتساب بنچ کو سننی چاہیے تھی،شاہد خاقان عباسی کے وکیل رانا مشہود احمد خان نے کہا کہ ہم نے سپیکر کے آرڈر کے خلاف عدالت میں آئے ہیں، نیب کیسز میں نہیں، سرکاری وکیل نے کہا کہ اسمبلی سیشن ختم ہوچکا ہے اور 17 واں سیشن 2 جنوری سے شروع ہونا ہے جو 30 دن تک جاری رہے گا،اگر اگلے سیشن میں شریک ہونا ہے تو اس کے لئے نئی درخواست دائر کریں، عدالت نے رانا مشہود سے استفسار کیا کہ کیا شاہد خاقان عباسی نے کسی مخصوص سیشن کے لئے درخواست دی تھی؟ رانا مشہود نے کہا کہ شاہد خاقان عباسی کسی خاص سیشن کے لئے نہیں بلکہ سپیکر کے اقدام کے خلاف عدالت میں آئے ہیں، سرکاری وکیل نے کہا شاہد خاقان عباسی نے 16ویں سیشن میں شرکت کے لئے درخواست دی تھی، سپیکر کے لئے ارکان اسمبلی کو سیشن میں شرکت کی اجازت دینا لازم ہے جس کی خلاف ورزی ہوئی، سرکاری وکیل نے کہاماضی میں جتنے بھی پروڈکشن آرڈر جاری ہوئے وہ ایک سیشن کے لئے ہوتے تھے، اگر شاہد خاقان عباسی کی حاضری ضروری ہے تو پھر وہ آسکیں گے، درخواست گزار بیمارہے،انہیں ابھی آرام کی ضرورت ہے، جس پر فاضل جج نے کہا کہ اس بات کا فیصلہ شاہد خاقان عباسی نے خود کرنا ہے کہ انہوں نے آرام کرنا ہے یا نہیں، عدالت نے سرکاری وکیل کو حکومت کے جواب کی نقل درخواست گزار کے وکیل کودینے کی ہدایت بھی کی۔

شاہد خاقان

مزید : صفحہ آخر