لینڈ ریکارڈ اتھارٹی ملازمین کی ہڑتال‘ رجسٹریشن کا عمل بند‘ حکومت کو بھاری نقصان

  لینڈ ریکارڈ اتھارٹی ملازمین کی ہڑتال‘ رجسٹریشن کا عمل بند‘ حکومت کو ...

  



ملتان (نیوز رپورٹر) لینڈ ریکارڈ اتھارٹی ملازمین کی اپنے مطالبات کے حق میں کام چھوڑ ہڑتال کے باعث سکنی و زرعی اراضی کی فرد ملکیت کا حصول اور جائیدادوں کی خرید و فرخت (بقیہ نمبر45صفحہ7پر)

سمیت رجسٹری برانچ میں رجسٹریشن کا عمل بھی ٹھپ ہو کر رہ گیا ہے جس کے باعث ملتان سمیت صوبہ بھر میں روزانہ کی بنیاد پر حکومت کو ٹیکسز کی مد میں کروڑوں روپے کے نقصانات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور پراپرٹی کے کاروبار سے منسلک بزنس کمیونٹی و شہریوں کو شدید مشکلات و اذیت سے دوچار ہونا پڑ رہا ہے ذرائع کے مطابق رجسٹری برانچ میں تحصیل صدر اور سٹی کی فقط ان مواضعات کی جائیدادوں کی مینول رجسٹریشن کی جارہی ہے جنہیں ابھی تک آن لائن ریکارڈ میں شامل نہیں کیا جاسکا ہے تحصیل صدر کے 274 مواضعات میں سے صرف 17 مواضعات آن لائن نہ ہونے کے باعث مینول انداز میں پٹواریوں کے ذریعے فرد ملکیت جاری ہونے پر رجسٹریشن ہورہی ہے جبکہ تحصیل سٹی کی 98 یونین کونسلز میں سے 64 آن لائن ہوچکی ہیں اور بقیہ 34 یونین کونسلز کی خرید و فروخت اور رجسٹریشن جاری ہے ذرائع نے بتایا کہ لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کی کام چھوڑ ہڑتال کے باعث جائیدادوں کی رجسٹریشن کا عمل 80 فیصد کم ہوکر رہ گیا ہے جبکہ لینڈ ریکارڈ عملہ کی جانب سے ای سائڈ کی ویب سائٹ بھی بند کردی گئی ہے جس کے بغیر چالان کا اجراء اور بینک میں فیسیں جمع کروانے سمیت سٹیمپ پیپرز کا حصول بھی ناممکن بنادیا گیا۔

ہٹرتال

مزید : ملتان صفحہ آخر