عدلیہ اپنا اعتماد بحال کرے،طاقتور اور کمزور کیلئے الگ الگ قانون کا تاثر ہہے،چیف جسٹس انصاف در کر ملک کو آزاد کریں،حکومت سے جو مدد چاہیے ہم تیار ہیں:وزیر اعظم

عدلیہ اپنا اعتماد بحال کرے،طاقتور اور کمزور کیلئے الگ الگ قانون کا تاثر ...

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ اللہ نے مجھے مافیا کا مقابلہ کرنے کیلئے تیار کیا ہوا ہے، میں مافیا سپیشلسٹ ہوں،مجھے جیتنا بھی آتا ہے اور ہارنا بھی اور ہار کر جیتنا بھی،شریف برادران جنرل جیلانی کے گھر کا سریا لگاتے لگاتے وزیر بن گئے، میں کسی ایک کو بھی معاف نہیں کروں گا، چاہے سارے اکٹھے ہوجائیں۔وزیراعظم عمران خان نے ہزارہ موٹر وے کی افتتاحی تقریب سے خطاب میں کہا کہ مجھے کہا جاتاہے کہ نواز شریف کو کچھ ہوا تو میں ذمہ دار ہوں گا، جو 800 سے زائد قیدی پچھلے دور میں جیلوں میں مرگئے ان کا ذمہ دار کون ہے؟ان کا کہنا تھا کہ ملکی نظام عدل کاتاثر یہی ہے کہ یہاں طاقتور کیلئے ایک قانون ہے اور کمزور کیلئے دوسرا، عدلیہ عوام میں اپنا اعتماد بحال کرے، چیف جسٹس کھوسہ اور ان کے بعد آنے والے جسٹس گلزار ملک کو انصاف دے کر آزاد کریں، ماضی میں ایک چیف جسٹس کو فارغ کرنے کیلئے دوسرے جج کو نوٹوں کے بریف کیس دے کر بھیجا گیا۔ سیاسی مخالفین کو سزائیں دلوانے کے ٹیلیفون پر فیصلے لکھوائے گئے۔وزیراعظم عمران خان نے ہزارہ موٹر وے کے ایک سیکشن کا افتتاح کردیاجس کا سنگ بنیاد سابق وزیراعظم نواز شریف نے 2014 ء میں رکھا تھا۔ ان کہنا تھا کہ کھیل ہو یا کوئی اور میدان جیت ہمیشہ جنون کی ہوتی ہے۔ ان کا کہنا تھا سی پیک صرف ایک سڑک کا نام نہیں ہے بلکہ یہ پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کا منصوبہ ہے، ہم نے موٹر ویز تو بنانی ہیں لیکن پیسہ عوام پر خرچ کرنا ہے۔جے یو آئی ف کے دھرنے کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں ایک سرکس ہوئی، دھرنے سے ہماری کابینہ کے کچھ لوگ گھبرا گئے تھے کیونکہ وہ کمزور دل رکھتے ہیں لیکن میں نے انہیں سمجھایا کہ تسلی رکھیں کچھ نہیں ہو گا۔انہوں نے کہا کہ جو جتنا بڑا کرپٹ تھا وہ کنٹینر پر اتنا ہی زیادہ شور مچا رہا تھا۔سی پیک کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ اس سے ہمیں بہت فائدہ ملے گا، ہمیں پاک چین اقتصادی راہداری سے زراعت کو بہت فائدے ملے گا ہماری زراعت کی پیداوار بہت کم ہے اب بہت تیزی سے آگے بڑھے گی۔ ہم زرخیز زمین ہیں، ہمیں صرف پیداوار دگنی ہیں تو پاکستان میں خوشحالی آجائے گی، اس کے لیے ہمیں پانی کا صحیح استعمال کرنا ہو گا۔ دودھ کی پروڈکشن بھی بڑھانے کے لیے سی پیک اہم کردار اد کرے گا۔ان کا کہنا تھا کہ چین ہمارے نوجوانوں کو ٹیکنیکل ایجوکیشن دے رہے ہیں، یہ یوتھ ہماری طاقت بن جائے گی۔ انڈسٹری ہر قسم کی پاکستان میں آرہی ہے۔وزیراعظم کا کہنا تھا کہ مراد سعید کی تعریف کرتا ہوں ان کا تعلق کسی سیاستدان سے تعلق نہیں، یہ میرٹ پر آئی ایس ایف کے ذریعے اوپر آئے، ان کی وزارت نے بہت اچھے کام کیے، پوسٹل سروس کو اٹھانا میں نے مراد سعید کو مبارکباد دیتا ہوں۔عمران خان کا کہنا تھا کہ ملک میں پیسہ اپنے عوام پر لگانا ہے، نوجوانوں پر پیسہ لگانا ہے، تعلیم پر اور ہسپتالوں پر پیسہ لگائیں گے، موٹروے اور سی پیک کے تحت سڑکیں بھی بنائیں گے، سڑکوں کے لیے جو چیزیں باہر سے منگوائیں گئے اس پر ڈیوٹی فری ہو گی۔ان کا کہنا تھا کہ پہلا سال بہت مشکل تھا، پیسہ نہیں تھا، انڈسٹری لگانے کے لیے تگ و دو کر رہے ہیں۔ ہاؤسنگ سیکٹر میں کوشش کر رہے ہیں، 50 لاکھ گھر بنائیں گے، قانون میں تبدیلی لا رہے ہیں، مجھے یقین ہے کہ ہاؤسنگ سیکٹر کام شروع ہو گا تو چالیس انڈسٹری مزید اٹھیں گی۔قبل ازیں وزیراعظم عمران خان سے معاون خصوصی زلفی بخاری، بابراعوان اور عامر لیاقت حسین نے بنی گالہ میں الگ الگ ملاقائیں کیں۔اپنی گفتگو میں عمران خان نے کہا ہے کہ رولز آف لاء سے کسی صورت پیچھے نہیں ہٹیں گے، این آر او مانگنے والے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں۔ وزیراعظم نے 2 روز کے تعطل کے بعد آج سے سرکاری و پارٹی مصروفیات کا آغاز کر دیا۔بابر اعوان کی ملاقات کے دوران نواز شریف کے ای سی ایل کیس سمیت آئینی قانونی اور سیاسی امور پر مشاورت کی گئی۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے دوٹوک الفاظ میں کہا ادارے پاکستان کو مضبوط رکھنے کے لئے ایک پیج پر ہیں، ملک میں انصاف کا بول بالا چاہتے ہیں، احتساب ہی ہمیشہ پہلی ترجیح رہے گی، کرپشن ریاست کیلئے دیمک ہے، اداروں کی تعمیر نو اور مضبوطی کے بغیر کام نہیں چلے گا، عوامی ریلیف کے لئے اس ماہ بڑے ایکشن سامنے آئیں گے۔عمران خان کا کہنا تھا کشمیر سے متعلق کہا کشمیر شہ رگ ہے اور آزادی کشمیریوں کی منزل ہے، میڈیا قوم کی تعلیم و تربیت کا فرض ادا کرے، اصلاحاتی ایجنڈے کے تحت ادارے مضبوط ہو رہے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان 

مزید : صفحہ اول