صوابی، ویمن یونیورسٹی کی طالبات کا اساتذہ فارغ کرنے کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

صوابی، ویمن یونیورسٹی کی طالبات کا اساتذہ فارغ کرنے کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

  



صوابی(بیورورپورٹ)وومن یونیورسٹی صوابی کی طالبات نے پی ایچ ڈی سمیت دیگر اساتذہ کو فارغ کئے جانے کے خلاف مظاہرہ کر کے کلاسز سے بائیکاٹ کیا۔ احتجاج کرنے والی طالبات کا کہنا ہے کہ ووومن یونیورسٹی صوابی کی انتظامیہ نے حال ہی میں مختلف شعبوں کے اساتذہ کو بغیر کسی وجہ بتائے نوکریوں سے فارغ کر دیا گیا جس میں پی ایچ ڈیز اساتذہ بھی شامل تھے جب کہ ان کی جگہ غیر متعلقہ اساتذہ کو ان کی فیکلٹی میں تعینات کئے جا رہے ہیں جو طالبات کو مضامین پڑھانے کے قابل بھی نہیں جب کہ فارغ ہونے والے اساتذہ نہ صرف تعلیمی معیار پر پورا اتر رہے تھے بلکہ اپنی قابلیت کی بدولت طالبات کو پڑھائی کر وا رہے تھے انتظامیہ نے قابل اساتذہ کو فارغ کر کے طالبات کی مستقبل کو داؤ پر لگا دیا۔ جس پر ویمن یونیورسٹی گلوڈھیری صوابی کی طالبات اپنے مطالبات کے حق میں سراپااحتجاج بن گئی۔طالبات کا کہناہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ میل پی ایچ ڈی اساتذہ کو یونیورسٹی سے ختم کررہے ہیں۔یونیوسٹی میں پہلے سے اساتذہ کی کمی ہے اور اب پی ایچ ڈی اساتذہ کو یونیورسٹی سے ختم کیاجارہاہے۔طالبات کا کہناہے کہ اگر یونیورسٹی سے میل سٹاف ختم کیا جارہاہے تو سب سے پہلے وی سی یونیورسٹی جوکہ میل ہے کو ختم کیاجائیاور بعد میں یونیورسٹی میں جتنی بھی میل سٹاف ہے ان سب کو ختم کیاجائینہ کہ صرف پی ایچ ڈی میل اساتذہ اور اگر پی ایچ ڈی میل اساتذہ کو ختم کیاجارہاہے تو اسکے بدلے ہمیں پی ایچ ڈی ڈگری ہولڈر فی میل اساتذہ دی جائے نہ کہ ایم ایس بی ایس اساتذہ جو کہ ہمیں صیح طریقے سے پڑھائی نہیں کرسکتی۔طالبات کا کہنا ہے کہ ہمیں یونیوسٹی کی طرف سے دبایا جارہاہے ہمیں دھمکیاں دی جارہی ہیں کہ آپ کی ڈگریاں کینسل کردی جائیگی جوکہ قابل مذمت ہے۔طالبات نے پلے کارڈ اُٹھا رکھی تھی جس پر ''جینا ہو گا مرنا ہو گا دھرنہ ہو گا دھرنہ ہو گااساتذہ کو بحال کرنا ہو گا''ڈاکٹر طاہر سلیم کو بحال، ڈاکٹر اشفاق احمد کو واپس اور ڈاکٹر زیب النساء کو بحال کرنا ہو گا، بند کرو بند کرو پی ایچ ڈیز کو ہٹانا بند کرو، ڈاکٹر اشفاق الرحمن کے خلاف جاری کارروائیاں ختم کرنی ہو گی تمام اساتذہ کے خلاف جعلی اور من گھرٹ کارروائیاں واپس کرواور دیگر نعرے درج تھے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر