باہمی تجارت بڑھانے کیلئے نئی مصنوعات متعارف کرائی جائیں:بیلجیئم سفیر

باہمی تجارت بڑھانے کیلئے نئی مصنوعات متعارف کرائی جائیں:بیلجیئم سفیر

  



لاہور(کامرس ڈیسک) پاکستان میں بیلجیئم کے سفیر فلپ برونشین نے کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان تجارت، سرمایہ کاری، معاشی اور دوستانہ تعلقات کا استحکام ان کے لیے بہت اہم ہے اور وہ اس کے لیے بھرپور کوششیں کریں گے۔ وہ لاہور چیمبر میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔ لاہور چیمبر کے صدر عرفان اقبال شیخ، سینئر نائب صدر علی حسام اصغر، نائب صدر میاں زاہد جاویداحمد اور بیلجیئم سفارتخانے کے ٹریڈ کمشنر عابد حسین نے اس موقع پر خطاب کیا جبکہ سابق سینئر نائب صدر امجد علی جاوا،ایگزیکٹو کمیٹی اراکین حاجی آصف سحر، حارث عتیق، عاقب آصف، ایم ارشد خان، سجاد افضل، واصف یوسف، نصرت طاہر اور ذیشان سہیل ملک بھی اجلاس میں موجود تھے۔ سفیر نے کہا کہ دونوں ممالک باہمی تعاون کے لیے نئے شعبے تلاش کریں اور تجارت کے لیے نئی مصنوعات متعارف کرائیں، بیلجیئم کی کمپنیاں پاکستانی مارکیٹ میں گہری دلچسپی رکھتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان یورپین یونین میں بیلجیئم کی بہترین جغرافیائی حیثیت سے بھرپور فائدہ اٹھائے۔

 انہوں نے کہا کہ جی ایس پی پلس سٹیٹس سے بھرپور فائدہ اٹھانے کے لیے پاکستان اس کے تمام کنونشنز پر عمل درآمد یقینی بنائے۔ لاہور چیمبر کے صدر عرفان اقبال شیخ نے کہاکہ پاکستان اور بیلجیئم کے درمیان  بہترین سفارتی تعلقات سفارتی تعلقات ہیں، جبکہ پاکستان کی یورپین یونین کے ساتھ تجارت کے حوالے سے بیلجیئم چھٹے نمبر پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2016ء میں باہمی تجارت کا حجم 1.22ارب ڈالر تھا جو 2018ء میں کم ہوکر 979ملین ڈالر رہ گیا، اس حجم میں اضافے کے لیے دونوں ممالک کو مل کر کوششیں کرنا ہونگی، ٹھوس اقدامات اٹھاکر باہمی تجارت کو دو ارب ڈالر تک پہنچایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رواں سال کے آغاز میں ٹریڈ ڈویلپمنٹ اتھارٹی آف پاکستان نے بیلجیئم کی تجارت و سرمایہ کاری سے متعلق تین تنظیموں کے ساتھ مفاہمتی یادداشت پر دستخط کیے ہیں، توقع ہے کہ اس سے دوطرفہ تجارت بڑھانے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ یورپین یونین کی جانب سے پاکستان کو دئیے جانے والے جی ایس پی پلس سٹیٹس کے تحت دوطرفہ تجارت بڑھانے کی وسیع گنجائش ہے۔ 

 لاہور چیمبر کے سینئر نائب صدر علی حسام اصغر نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان تجارت میں کمی تشویشناک ہے، تجارت کے لیے نئی مصنوعات متعارف کرواکر اور ایگروفوڈ پراسیسنگ، کیمیکلز، آلات جراحی، پیپر اینڈ پیپر بورڈ، ڈیری اور فرٹیلائزرز سمیت دیگر شعبوں میں مشترکہ منصوبہ سازی کے ذریعے مطلوبہ اہداف حاصل کیے جاسکتے ہیں۔ ٹریڈ کمشنر عابد حسین نے کہا کہ پاکستانی تاجروں کو بیلجئم میں اپنے ہم منصبوں کے ساتھ مل کر مشترکہ منصوبہ سازی کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ تجارت میں اتارچڑھاؤ معمول کی بات ہے، مجموعی طور پر دوطرفہ تجارت تسلی بخش ہے جس میں مزید اضافہ کیا جاسکتا ہے۔ 

مزید : کامرس