جننگ فیکٹریوں میں 68لاکھ گانٹھوں سے زائد کپاس پہنچ گئی

جننگ فیکٹریوں میں 68لاکھ گانٹھوں سے زائد کپاس پہنچ گئی

  



ملتان (اے پی پی)پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن (پی سی جی اے) کے جاری کردہ اعداد وشمار کے مطابق 15نومبر2019تک ملک بھر کی جننگ فیکٹریوں میں 68لاکھ57ہزار518گانٹھ کپاس آئی جبکہ گزشتہ سال15 نومبر 2018 تک 86 لاکھ 71 ہزار 596گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی تھی اورکمی کی شرح 20.92فیصد رہی۔صوبہ پنجاب کی فیکٹریوں میں 36 لاکھ 92ہزار205گانٹھ کپاس آئی ہے جو گذشتہ سال کی اسی مدت میں  49 لاکھ85ہزار116گانٹھ کپاس آئی جبکہ پنجاب میں کمی کی شرح25.94فیصد رہی۔صوبہ سندھ کی فیکٹریوں میں 31لاکھ65ہزار313گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی ہے جبکہ گذشتہ سال36لاکھ 86ہزار480گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی تھی۔صوبہ سندھ میں کمی کی شرح 14.14فیصد رہی۔ ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان(TCP)نے کاٹن سیزن 2019-20میں خریداری نہیں کی ہے۔ضلع ملتان میں 15 نومبر2019تک1لاکھ11ہزار458گانٹھ کپاس،ضلع لودھراں میں 50ہزار261گانٹھ کپاس، ضلع خانیوال میں 3لاکھ23ہزار 391گانٹھ کپاس، ضلع مظفر گڑھ میں 1لاکھ71ہزار 181گانٹھ کپاس،ضلع ڈیرہ غازی خان میں 3لاکھ4ہزار257گانٹھ کپاس، ضلع راجن پور میں 2لاکھ54ہزار677گانٹھ کپاس، ضلع لیہ میں 1لاکھ31 ہزار502  گانٹھ کپاس،ضلع وہاڑی میں 1لاکھ 79ہزار380گانٹھ کپاس، ضلع ساہیوال میں 1لاکھ77 ہزار09گانٹھ کپاس، ضلع رحیم یار خان میں 6لاکھ93ہز ار472گانٹھ کپاس، ضلع بہاولپور میں 4لاکھ31ہزار889گانٹھ کپاس، ضلع بہاولنگر میں 6لاکھ 44ہزار127گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی ہے۔ ضلع سانگھڑمیں 10لاکھ83ہزار 967      گانٹھ کپاس، ضلع میر پور خاص میں 1لاکھ25ہزار084 گانٹھ کپاس، ضلع نواب شاہ میں 1 لاکھ 99 ہزار 945 گانٹھ کپاس، ضلع نو شہرو فیروز میں 2لاکھ 85ہزار673 گانٹھ کپاس موجود ہے۔

 ضلع خیر پور میں 2لاکھ53ہزار 413گانٹھ کپاس، ضلع سکھر میں 4 لاکھ 43 ہزار 655گانٹھ کپاس، ضلع جام شورو میں 90 ہزار 804 گانٹھ کپاس  اور ضلع حیدرآباد میں 2 لاکھ 5 ہزار 563 گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی ہے۔پی سی جی اے کے مطابق غیر فروخت شدہ سٹاک میں 15لاکھ52 ہزار749 گانٹھ کپاس اور روئی موجود ہے۔

مزید : کامرس