کتے کے کاٹنے سے زخمی حسنین کے علاج کیلئے میڈیکل بورڈ تشکیل

  کتے کے کاٹنے سے زخمی حسنین کے علاج کیلئے میڈیکل بورڈ تشکیل

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)لاڑکانہ میں کتوں کے کاٹنے سے زخمی حسنین کے علاج کے لیے میڈیکل بورڈ تشکیل دے دیا گیا ہے، 10 رکنی بورڈ کے چیئرمین این آئی سی ایچ کے ڈاکٹر جمشید اختر ہوں گے،۔تفصیلات کے مطابق لاڑکانہ میں کتوں کا شکار ہونے والے معصوم بچے حسنین کی زندگی بچانے کے لیے ماہر ڈاکٹرز پر مشتمل طبی بورڈ بنایا گیا ہے، اس سلسلے میں جاری کیے گئے نوٹی فکیشن میں کہا گیا ہے کہ بورڈ میں مختلف اسپتالوں کے ڈاکٹرز شامل کیے گئے ہیں۔دس رکنی میڈیکل بورڈ میں پانچ سرکاری و نجی اسپتال کے ڈاکٹرز شامل کیے گئے ہیں۔پانچ سالہ حسنین کے لیے قائم کیے گئے میڈیکل بورڈ میں وائس چانسلر جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر طارق رفیع بھی شامل ہیں۔ترجمان حکومت سندھ بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا ہے کہ لاڑکانہ میں کتے کے کاٹے سے متاثرہ بچے حسنین کے لیے وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ نے خصوصی میڈیکل بورڈ قائم کردیا ہے۔بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا کہ خصوصی میڈیکل بورڈ محمد حسنین کے علاج کے حوالے سے اقدامات کریگا۔ ترجمان حکومت سندھ بیرسٹر مرتضی وہاب نے بتایاکہ خصوصی میڈیکل بورڈ میں پلاسٹک سرجن،پیڈیاٹرک سرجنز اور ای این ٹی سرجن اور دو نجی اسپتال کیڈاکٹرز کو بھی شامل کیا گیا ہے۔خصوصی میڈیکل بورڈ کتے کے کاٹے سے زخمی حسنین کے مزید علاج کا مفصل پلان مرتب کریگا۔ انہوں نے کہا کہ ضرورت پڑی تو ملک و بیرون ملک علاج کے لیے سہولیات فراہم کریں گے۔بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا کہ حکومت سندھ شہریوں کو بہترین طبی سہولیات کی فراہمی کے لیے کوشاں ہے۔۔خیال رہے کہ لاڑکانہ کا رہایشی 5 سال کا حسنین این آئی سی ایچ میں زیر علاج ہے، چائلڈ سرجن ڈاکٹر انور نے کہا ہے کہ میڈیکل بورڈ حسنین کی سرجری کا معائنہ کر رہا ہے۔ انھوں نے خوش خبری سنائی کہ بچے کی صحت میں بہتری کا عمل شروع ہو چکا ہے، حسنین کی مزید سرجریز کا فیصلہ معائنے کے بعد ہوگا، اللہ سے پوری امید ہے بچہ معمول کی زندگی میں واپس آجائے گا۔

مزید : صفحہ آخر