آغا سراج کی درخواست ضمانت پر نیب پراسیکیوٹر سے دلائل طلب

آغا سراج کی درخواست ضمانت پر نیب پراسیکیوٹر سے دلائل طلب

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائیکورٹ نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی اور دیگر کی درخواست ضمانت پر ملزمان کے وکلا کے دلائل مکمل ہونے پر نیب پراسیکیوٹر سے دلائل طلب کرلیئے۔ جسٹس عمر سیال اور جسٹس ذولفقار علی سانگی پر مشتمل دو رکنی بینچ کے روبرو اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی اور دیگر کی درخواست ضمانت پر سماعت ہوئی۔ عدالت نے استفسار کیا کہ اس کیس میں ذوالفقار کا کیا رول ہے؟ نیب حکام نے بتایا کہ  ذوالفقار سرکاری ملازم ہے مگر کام آغا سراج درانی کیلیے کرتا ہے۔ آغا سراج درانی کے ملازم کے نام پر 5 کروڑ کے پے آرڈرز جاری ہوئے تھے۔ ان تمام پے آرڈرز سے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کے بچوں کی فیس اور فلیٹ خریدے  گئے تھے۔ دوران سماعت نیب پراسیکوٹر اور ملزم کے وکلا کے درمیان تلخ کلامی بھی ہوئی۔ جس پر عدالت نے ریماکس دیئے اگر ایسا ہی چلا تو معاملہ حل نہیں ہوسکتا۔ اسپیکر سندھ اسمبلی کے وکیل عامر نقوی نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ آغا سراج درانی گرفتار ہیں۔ آغا سراج درانی کے بھائی آغا مسیح الدین عبوری ضمانت پر ہیں۔ کیس میں نامزد گلزار احمد،  شکیل سومرو،  ذوالفقار ڈہر و دیگر عبوری ضمانت پر ہیں۔

مزید : صفحہ آخر