نوازشریف کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کے حق میں نہیں ،اگر کوئی سمجھتا ہے کرپشن کیخلاف ہم نے سرنڈر کر دیا تو یہ اس کی بھول ہے ،عمران خان

نوازشریف کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کے حق میں نہیں ،اگر کوئی ...
نوازشریف کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کے حق میں نہیں ،اگر کوئی سمجھتا ہے کرپشن کیخلاف ہم نے سرنڈر کر دیا تو یہ اس کی بھول ہے ،عمران خان

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ نوازشریف کیلئے بانڈز کی شرط واپسی کو یقینی بنانے کیلئے تھی ،ہم عدالتوں کا احترام کرتے ہیں ،نوازشریف کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کے حق میں نہیں ،وزیراعظم نے کہا کہ حکومت کی شورٹی بانڈز کی شرط غیر قانونی نہیں تھی،نوازشریف کی جلد صحت یابی کیلئے دعا گو ہیں ،اگر کوئی سمجھتا ہے کرپشن کیخلاف ہم نے سرنڈر کر دیا تو یہ اس کی بھول ہے ،ملکی دولت لوٹنے والوں کا احتساب جاری رہے گا،وزیراعظم نے کہا کہ اداروں کے درمیان غلط فہمیاں پیدا کرنے کی کوشش کامیاب نہیں ہو گی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ختم ہوگیا،ایجنڈے میں شامل7 نکات کی منظوری دیدی گئی،وفاقی کابینہ اجلاس کے اختتام پر زیرو آور میں نوازشریف کے کیس سے متعلق معاملات پر مشاورت ہوئی،مشاورت میں نوازشریف کیس میں اپیل کرنے یانہ کرنے کا حتمی فیصلہ ہو گا،ذرائع کا کہنا ہے کہ کابینہ ارکان نے نوازشریف کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا مشورہ دیا۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ نوازشریف کیلئے بانڈز کی شرط واپسی کو یقینی بنانے کیلئے تھی ،ہم عدالتوں کا احترام کرتے ہیں ،نوازشریف کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کے حق میں نہیں ،ذرائع کا کہنا ہے کہ کابینہ کے اکثریتی ارکان نے عدالتی فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج نہ کرنے کا مشورہ دیا،وفاقی وزیر فوادچودھری نے فیصلے کو چیلنج کرنے کا مشورہ دیا۔

وزیراعظم نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی شورٹی بانڈز کی شرط غیر قانونی نہیں تھی،نوازشریف کی جلد صحت یابی کیلئے دعا گو ہیں ،اگر کوئی سمجھتا ہے کرپشن کیخلاف ہم نے سرنڈر کر دیا تو یہ اس کی بھول ہے ،وزیراعظم نے کہا کہ ملکی دولت لوٹنے والوں کا احتساب جاری رہے گا،اداروں کے درمیان غلط فہمیاں پیدا کرنے کی کوشش کامیاب نہیں ہو گی۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد