جانوروں میں ہم جنس پرستی پر انتہائی دلچسپ تحقیق

جانوروں میں ہم جنس پرستی پر انتہائی دلچسپ تحقیق
جانوروں میں ہم جنس پرستی پر انتہائی دلچسپ تحقیق

  



نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) انسانوں میں تو کچھ لوگ ہم جنس پرستی کی لت میں مبتلا ہوتے ہی ہیں۔ اب سائنسدانوں نے جانوروں میں ہم جنس پرستی کے متعلق ایک تحقیق کی ہے اوراس کے انتہائی دلچسپ نتائج سامنے آئے ہیں۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے جانوروں کی 1500مختلف اقسام پر یہ تحقیق کی جن میں کیکڑے، سانپ، بندر اور شیر بھی شامل تھے۔ تحقیقاتی نتائج میں سائنسدانوں نے بتایا کہ جانوروں کی کئی اقسام میں بھی ہم جنس پرستی معمول کی بات ہے اور یہ آج سے نہیں بلکہ ہزاروں سال قبل آج کے موجودہ جانوروں کے آباﺅ اجداد سے یہ سلسلہ چلا آ رہا ہے۔

برطانیہ کی ’ییل یونیورسٹی ‘ (Yale University)کے سائنسدانوں کی اس تحقیق میں پتا چلا کہ جانوروں کی زیادہ تر اقسام ایسی ہیں جو نر اور مادہ دونوں میں جنسی رغبت رکھتی ہیں۔ بہت کم ایسی اقسام ہیں جو کلی طور پر مخالف جنس میں جنسی رغبت رکھتی ہیں۔تحقیقاتی ٹیم کی سربراہ جولیا مونک کا کہنا تھا کہ ایک اندازے کے مطابق دنیا میں جانوروں کی لگ بھگ 95فیصد اقسام ایسی ہیں جن میں کسی نہ کسی پیمانے پر ہم جنس پرستی پائی جاتی ہے۔ تاہم اس حوالے سے حتمی طور پر کچھ نہیں کہا جا سکتا کہ کس قسم کے جانوروں میں کتنے فیصد ہم جنس پرست ہوتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس