پاکستانی ہسپتال میں 13 سالہ بچی ماں بن گئی، اس کے ساتھ کیا ہوا تھا؟ انتہائی شرمناک انکشاف سامنے آگیا

پاکستانی ہسپتال میں 13 سالہ بچی ماں بن گئی، اس کے ساتھ کیا ہوا تھا؟ انتہائی ...
پاکستانی ہسپتال میں 13 سالہ بچی ماں بن گئی، اس کے ساتھ کیا ہوا تھا؟ انتہائی شرمناک انکشاف سامنے آگیا

  



حیدرآباد(مانیٹرنگ ڈیسک) حیدرآباد میں جنسی زیادتی کی شکار 13سالہ یتیم بچی نے بچے کو جنم دے دیا۔ ایکسپریس ٹربیون کے مطابق اس بچی کا تعلق ضلع جیکب آباد سے تھا جسے کئی ماہ تک جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا رہا اور وہ اس کے نتیجے میں حاملہ ہو گئی۔ اس کے ہاں بچے کی پیدائش شیخ زید ہسپتال لاڑکانہ ڈسٹرکٹ میں ہوئی۔ پولیس کے مطابق بچی سے زیادتی کے مقدمے میں ظفر اللہ سرہیو، کامران پٹھان اور دو نامعلوم افراد کو نامزد کیا گیا ہے۔

پولیس نے ظفر اللہ اور کامران کو گرفتار کیا جو ضمانت پر رہا ہو چکے ہیں جبکہ نامعلوم افراد کی تاحال شناخت ہی نہیں ہو سکی اور انہیں مفرور قرار دیا جا چکا ہے۔رپورٹ کے مطابق بچی نے اپنے ساتھ ہونے والی جنسی زیادتی کے متعلق اپنے گھر والوں کو کچھ نہیں بتایا۔ گھر والوں کو اس وقت پتا چلا جب اس کے حاملہ ہونے کے آثار نمایاں ہونے لگے۔ بچی کی بیوہ ماں نے الزام عائد کیا ہے کہ بچی کو ظفر اللہ کھانے کے بہانے اپنے گھر لے جاتا تھا جہاں وہ اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بناتا رہا۔ بچی اچھا کھانا ملنے کی وجہ سے لالچ میں آ کر ان کے پاس جاتی رہی۔میں بیوہ اور بے آسرا عورت ہوں۔ میری حکومت اور عدیہ سے درخواست ہے کہ مجھے انصاف دلایا جائے۔

مزید : علاقائی /سندھ /حیدرآباد