نواز شریف واپس نہ آئے تو شہباز شریف پرتوہین عدالت لگ سکتی ہے : وفاقی وزیر قانون

نواز شریف واپس نہ آئے تو شہباز شریف پرتوہین عدالت لگ سکتی ہے : وفاقی وزیر ...
نواز شریف واپس نہ آئے تو شہباز شریف پرتوہین عدالت لگ سکتی ہے : وفاقی وزیر قانون

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے کہا ہے کہ نواز شریف کی سزا معطل ہوئی ہے لیکن ختم نہیں ہوئی ، وہ واپس نہ آئے تو شہبازشریف پر توہین عدالت لگ سکتی ہے ۔

نجی نیوز چینل کے مطابق کابینہ کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فروغ نسیم نے کہا کہ ایڈیمنٹی بانڈ ضمانتی بانڈ نہیں ، شہباز شریف کے وکلا سے ایڈیمنٹی بانڈ یا حلف نامہ مانگا تھا۔ عدالت جا کر شہباز شریف کے وکلا حلف نامے پر راضی ہوگئے، اب اگر نواز شریف واپس نہ آئے تو شہباز شریف پر توہین عدالت لگ سکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ کابینہ نے اتفاق رائے سے نواز شریف کو چار ہفتے کی اجازت دی تھی۔ عدالت میں شہباز شریف نے ایڈیمنٹی بانڈ کے بجائے انڈر ٹیکنگ کو مان لیا۔ انہوں نے کہا کہ کریمنل جسٹس سسٹم کا ٹاسک وزیراعظم نے مجھے سونپا تھا، اس کی بہتری کے لیے کام شروع کردیا گیا ہے ۔

فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ عبوری حکم میں عدالت زیادہ تر اپیل نہیں سنتی، فیصلے کے خلاف اپیل کی ضرورت پڑی تو کریں گے۔ لاہور ہائیکورٹ نے بھی ایک بار کی اجازت دی۔ جب فائنل فیصلہ آئے گا، تب قانونی چارہ جوئی کرنے یا نہ کرنے سے متعلق غور کیاجائے گا ۔انہوں نے کہا کہ ملک میں زیادہ تر تباہی منی لانڈرنگ اور کک بیکس کی وجہ سے ہو رہی تھی۔ اب منی لانڈرنگ نہیں ہو رہی، اس لیے معیشت مستحکم ہورہی ہے ۔

مزید : اہم خبریں /قومی