309ارب روپے کی خطیر رقم زراعت کی ترقی پر خرچ کی جائیگی: محب اللہ خان 

            309ارب روپے کی خطیر رقم زراعت کی ترقی پر خرچ کی جائیگی: محب اللہ خان 

  

 پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے وزیر زراعت ولائیو سٹاک محب اللہ خان نے سابقہ امیدوار پی کے90ملک عدنان خان کی جانب سے کسانوں اور زمینداروں کیلئے ضلع بنوں میں منعقدہ کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کسانوں اور زمینداروں کی فلاح وبہبود کیلئے جو اقدامات کررہے ہیں پاکستان کی تاریخ میں اسکی مثال نہیں ملتی چار سالوں میں 309ارب روپے کی خطیر رقم زراعت کی ترقی پر خرچ کی جائیگی اور اس سال 95ارب روپے خیبر پختونخوا میں خرچ کئے جائیں گے اس موقع پر سیکرٹری زراعت محمد اسرار،ڈی جی لائیو سٹاک عالمزیب،فشریز حیسرو کلیم،ڈی جی سائل کنزرویشن یسین خان،کمشنر بنوں شوکت علی یوسفزئی،سابقہ امیدوار صوبائی اسمبلی ملک عدنان خان اور دیگر مشران اور زمیندار بھی موجود تھے صوبائی وزیر محب اللہ نے کہا کہ کرم تنگی ڈیم کی تعمیر شروع ہوچکی ہے اور اس ڈیم سے 16ہزار ایکڑ اراضی سیراب ہوگی جبکہ ڈیم سے متعلق بنوں کے عوام کے پانی کے حقوق، اور اراضی سے متعلق تحفظات کو دور کرنے کیلئے متعلقہ محکموں اور ضلعی افسران سے میٹنگ کرنے کے علاوہ سابقہ امیدوار پی کے90ملک عدنان خان کے ہمراہ وزیر اعلیٰ محمود خان سے ملاقات کریں گے پاکستان کی75فیصد آبادی کا دارومدار زراعت پر ہے اور وزیر اعظم عمران خان 75فیصد آبادی کی ترقی کیلئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات اٹھا رہے ہیں کیونکہ کسان خوشحال ہوگا تو پاکستان خوشحال ہوگا 14ارب روپے کی لاگت سے کنزر ویشن پروگرام عمران خان کی خواہش پر شروع کیا جارہا ہے جس میں سمال ڈیم،چیک ڈیم،پانی سٹور کرنے کے پراجیکٹ،بارانی پانی سٹور کرنے اور اس ریجن کے زرعی سسٹم کو بہتر بنانے کے پروگرام شامل ہیں اس حلقہ کے عوام نے وزیر اعظم عمران خان اور تحریک انصاف کے ساتھ وفا کی ہے ملک عدنان خان بنوں کے جو بھی مسائل لائیں گے ہم انہیں ترجیحی بنیادوں پر حل کریں گے کسانوں کو سبسڈی پر مشینری دیں گے انجیئرنگ ڈیپارٹمنٹ بنجر زمینوں کو قابل کاشت بنانے کیلئے پروگرام لارہا ہے واٹر مینجمنٹ کے تحت نالیں پختہ کی جائیں گی کرم پل بنوں کی مرمت کیلئے بھی متعلقہ محکموں کے ساتھ بات کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے دو سالوں میں 40ورائٹی متعارف کرائی ہیں اور مذید ریسرچ جاری ہے وزیر اعظم عمران خان نے موسمیاتی تبدیلی کے اثرات سے بچنے کیلئے پچھلی صوبائی حکومت میں بلین ٹری سونامی پراجیکٹ شروع کیا تھا اور اب 10بلین سونامی پراجیکٹ شروع کیا ہے اور ان طویل المدت منصوبوں سے پاکستان پر موسمی تبدیلی کے اثرات کم ہوں گے کھلی کچہری میں کسانوں نے زراعت اور پانی مسائل سے صوبائی وزیر کو آگاہ کیا اس موقع پر سیکرٹری زراعت خیبر پختونخوا محمد اسرار نے کہا کہ اس سال مارچ میں بارشوں کی وجہ سے فصلیں خراب ہوئیں اور پیدوار میں کمی آئی لیکن اسکے باوجود حکومت کسانوں کی ترقی کیلئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کرہی ہے اور کسانوں کے تحفظات دور کئے جائیں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -