پرامن افغانستان پوری دنیا کے امن و استحکام کیلئے ناگزیر ہے،شاہ محمود 

پرامن افغانستان پوری دنیا کے امن و استحکام کیلئے ناگزیر ہے،شاہ محمود 

  

 اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے پرامن افغانستان پورے خطے کے امن و استحکام کیلئے ناگزیر ہے،پاکستان، افغانستان سمیت خطے میں قیام امن کیلئے اپنی مخلصانہ کاوشیں جاری رکھے گا،ڈاکٹر عبداللہ عبداللہ، گلبدین حکمت یار اورسپیکر افغان اسمبلی سمیت اعلیٰ سطحی افغان وفود کی پاکستان آمد اور ان سے ہونیوالے تبادلہ خیال سے دو طرفہ تعلقات کو مزید وسعت ملے گی۔ بدھ کو مشاورتی کونسل امور خارجہ کا پندرہواں اجلاس وزارت خارجہ میں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی صدارت میں ہوا جس میں پارلیما نی سیکرٹری خارجہ عندلیب عباس، سیکرٹری خارجہ سہیل محمود،سابق سفراء، سابق خارجہ سیکرٹریز، ماہرینِ بین الاقوامی امور اور دیگر اراکین مشاورتی کونسل نے شرکت کی۔اجلاس میں خطے میں امن و امان کی صورتحال، اسلاموفوبیا کے بڑھتے ہوئے رجحان سمیت خارجہ پالیسی سے متعلقہ اہم علاقائی و عالمی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔وزیر خارجہ نے گذشتہ کچھ عر صے کے دوران، وزارتِ خارجہ کی جانب سے بروئے کار لاء گئی سفار تی کاوشوں اور اہم اقدامات، بھارت کی جانب سے پاکستان میں دہشت گردانہ کارروائیوں کی پشت پناہی اور ریاست مخالفت گروہوں کی معاونت کے ٹھوس شواہد اورایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف اورصدر بوسنیا ہرزیگووینا کے صدر شفیق جعفرووچ کے حالیہ دورہ پاکستان کی تفصیلات سے شرکاء کو آگاہ کیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا افغانستان میں مستقل قیام امن کیلئے بین الافغان مذاکرات کا نتیجہ خیز ہونا انتہائی اہم ہے۔انکا کہنا تھا میں نے ڈی جی آئی ایس پی آر کیسا تھ مشترکہ پریس کانفرنس میں پاکستان میں دہشتگردی کے حالیہ واقعات میں بھارت سرکار کے ملوث ہو نے کے ناقابلِ تردید شواہد دنیا کے سامنے رکھے۔ او آئی سی کے سیکرٹری جنر ل سمیت مختلف ممالک کے وزرائے خارجہ کیساتھ ہونیوالے حالیہ ٹیلیفونک رابطوں میں اسلاموفوبیا کے بڑھتے ہوئے رجحان کا معاملہ اٹھایا اور دنیا کی توجہ اس تشویشناک صورتحال کی طرف دلاتے ہوئے، اس کے سدباب کیلئے موثر اور مشترکہ اقدامات اٹھانے کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے کہاکہ گذشتہ دو ماہ کی قلیل مدت کے دوران، وزارتِ خارجہ نے پبلک ڈپلومیسی کے حوالے سے اہم اقدامات اٹھائے ہیں۔

شاہ محمودقریشی 

مزید :

صفحہ اول -