تحفظ بنیاد اسلام بل منظوری کیلئے گورنر کوبھیجا جائے، پرویزالٰہی 

  تحفظ بنیاد اسلام بل منظوری کیلئے گورنر کوبھیجا جائے، پرویزالٰہی 

  

لاہور(جنرل رپورٹر) سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی نے کہا ہے ہفتہ شانِ رحمتہ للعالمینؐ منانے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ تحفظ بنیاد اسلام بل کو فوری طور پر وزیراعلیٰ ہاؤس سے نکال کر گورنر کے پاس منظوری کیلئے بھیجا جائے کیونکہ خاتم النبیین حضرت محمدؐ کی شان میں گستاخی کرنے والوں کیلئے اس بل میں سزا بھی مقرر ہے۔ اپنی رہائش گاہ پر مختلف مکاتب فکر کے علماء کرام سے ملاقات کے موقع پر چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ دین کی خدمت اور شانِ رسولؐ منانے کا اصل کام قانون کو پاس کرنے میں ہے، تحفظ بنیاد اسلام بل کے حق میں لاکھوں لوگوں نے جلوس بھی نکالے۔ انہوں نے کہا کہ پچاس کروڑ مالیت کے سیرت سکالرشپ دینے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ بطور وزیراعلیٰ میں نے سیرت قرآن اکیڈمی سے جوکام شروع کیے تھے اس کو مکمل کیا جاتا، سیرت اکیڈمی میں ایم فل اور سیرت رسولؐ کی ریسرچ کلاسیں ہونی تھیں، ریسرچ سے پتہ چلنا تھا کہ خلفائے راشدین کا حکومت کرنے کا طریقہ کار کیا ہے اور اس سے آج کے حکمران کیسے فائدہ اٹھا سکتے ہیں، یہ سکالرشپ ایسے طلبہ کو دی جانی چاہئے، طلبہ کوئی اور مضمون پڑھیں گے تو ایسی سکالرشپ کا کیا فائدہ۔ چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ سیرت قرآن اکیڈمی کو بنانے کا اصل مقصد خاتم النبیین حضرت محمدؐ کی شان اقدس، اسوہ حسنہ اور سیرت النبیؐ کو اجاگر کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیرت قرآن اکیڈمی کو شہبازشریف نے دس سال تک تالے لگائے رکھے جبکہ اڑھائی سال موجودہ حکومت کو ہوگئے لیکن ابھی تک سیرت اکیڈمی میں کوئی کام نہ ہو سکا، سیرت اکیڈمی کا جامعہ الازہر اور اسلامک یونیورسٹی آف مدینہ سے الحاق ہونے جا رہا تھا وہ بھی نہیں ہوا، موجودہ حکومت نے ان ڈھائی سالوں میں سیرت اکیڈمی میں کون سا کام کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ربیع الاول کا مبارک مہینہ پورا گزر گیا اور یہ اب ہفتہ شان مصطفیؐ منا رہے ہیں۔

پرویزالٰہی 

مزید :

صفحہ آخر -