ڈیرہ ریجن: کالے پتھر کی خرید و فروخت روکنے کیلئے اقدامات شروع 

ڈیرہ ریجن: کالے پتھر کی خرید و فروخت روکنے کیلئے اقدامات شروع 

  

 ڈیرہ غازیخان (سٹی رپورٹر‘ ڈسٹرکٹ بیورو رپورٹ) آر پی او فیصل راناکی کمپیئن اور پروفیشنل پولیسنگ کی وجہ سے ریجن کے چاروں اضلاع میں ”کالے پتھر“ کی خرید و فروخت کم ہو گئی، آر پی او نے چاروں اضلاع کے ڈی پی اوز کو پولیس کارکردگی میں ”کالے پتھر“ (بقیہ نمبر27صفحہ 6پر)

کی غیر قانونی خرید و فروخت روکنے کے لئے کاروائیوں کو مرکزی نقطہ بنانے کی ہدایات جاری کردیں،چاروں اضلاع سے کالے پتھر کی روک تھام کے لئے اٹھائے گئے اقدامات کی رپورٹ طلب کر لی،تفصیلات کے مطابق ریجنل پولیس آفیسر ڈی آئی جی محمد فیصل رانا نے چارج سنبھالنے کے بعد پروفیشنل پولیسنگ کے ساتھ غیر معمولی پولیسنگ کو فروغ دیتے ہوئے خود کشیوں میں استعمال ہونے والے ”کالے پتھر“ کی غیر قانونی خرید فروخت کو روکنے کے لئے فوری اور سخت اقدامات اٹھانے کی ہدایات دیں،معاشرہ کے اہم طبقات نے آر پی او سے ملاقات کر کے انہیں بتایا کہ کالے پتھر کی غیر قانونی خرید و فروخت ریجن میں خودکشیوں  میں اضافے کا باعث بن رہا ہے،کیوں کہ کالے پتھر تک ہرمردو خاتون کی رسائی ہے کیوں کہ یہ نسبتاً سستا زہر سمجھا جاتا ہے،آر پی او فیصل رانا نے ریجن کے چاروں اضلاع ڈی جی خان،مظفر گڑھ،لیہ اور راجن پور کے ڈی پی اوز کو روزانہ کی بنیاد پر براہ راست ٹیلی فون کر کے ان سے کالے پتھر کی غیر قانونی خرید و فروخت کو روکنے کے لئے قانونی اقدامات اٹھائے جانے کے حوالے سے فالو اپ لیتے رہے،آر پی او فیصل رانا جس ضلع کے دورہ پر گئے وہاں پر ہونے والی کرائم میٹنگ میں سخت ہدایات دیں کہ ایس ایچ او ز ”کالے پتھر“ کی غیر قانونی خرید و فروخت کو روکنے کے لئے سخت قانونی اقدامات اٹھائیں،آر پی او کے سخت اقدامات کی وجہ سے ریجن کے چاروں اضلاع میں ”کالے پتھر“ کی خرید و فروخت کم ہونے سے خودکشیوں میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے،جس کا اظہار سوشل میڈیا پر عوام کی جانب سے کیا جارہا ہے،آر پی او فیصل رانا نے ریجن کے چاروں اضلاع کے ڈی پی اوز سے ٹیلی فون کر کے ان کو کالے پتھر کی غیر قانونی خرید و فروخت کے لئے اٹھائے گئے اقدامات کی تفصیل طلب کی۔

کالے پتھر

مزید :

ملتان صفحہ آخر -