پنجاب بار کونسل الیکشن‘ امیدوار متحرک‘ وکلاء کو ریلیف دینے کا عزم 

        پنجاب بار کونسل الیکشن‘ امیدوار متحرک‘ وکلاء کو ریلیف دینے کا عزم 

  

ملتان (خصو صی رپورٹر) صوبہ بھر کی طرح جنوبی پنجاب میں بھی پنجاب بار کونسل کے پانچ سال بعد ہونیوالے انتخابات کے لئے امیدوار وکلاء کی کمپئین جاری ہے۔ اس ضمن میں روزنامہ  پاکستان سے گفتگو کر تے ہو ئے ممبر پنجاب بار کونسل حافظ محمد نوید اختر نے کہا ہے کہ وہ نوجوان 

(بقیہ نمبر29صفحہ 6پر)

وکلاء کو وظیفہ دلوانے کی بجائے ایسے مواقع فراہم کریں گے کہ وہ اپنا باوقار روزگار شروع کرسکیں۔پاکستان بار کونسل کے ممبر چننے میں ووٹ کی فروختگی کی روایت کو توڑ کر ملتان کی نمائندگی شروع کرانے میں اپنا کردار ادا کریں گے۔ وکلاء کی معاملات کا خیال رکھتے ہوئے مسائل کو حل کریں گے، نئے وکلاء اور خواتین وکلا کو پیش آنی والے تعصبات کو ختم کریں گے۔ وکلاء کے لیے  تربیتی ورکشاپس منعقد کرائی جائیں گی، تاکہ نئے قوانین سے متعلق کورسز کراکے نوجوانوں کو اچھا وکیل بنایا جاسکے۔ وکلاء کو چائنا اور دیگر دوست ممالک کے وزٹ کراکے قوانین بارے آگاہی دلوائیں گے۔ امیدوار ممبر پنجاب بار کونسل محمد بلال بٹ نے کہا کہ وہ وکلاء کی فلاح و بہبود کے لیے کام کریں گے، وکلاء کی سربلندی کے لئے کام کرنا انکی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ کالے کوٹ کے تقدس اور وکلاء کے اعتماد پر پورا اترتے ہوئے انکی بھرپور کوشش ہوگی کہ وکلاء کو پنشن اور میڈیکل کی بہترین سہولیات فراہم کی جائیں۔ امیدوار ممبر پنجاب بار کونسل رانا محمد ندیم کانجو نے کہا ہے کہ اس وقت وکلاء کا کوئی پرسان حال نہیں اگر اللّٰہ نے کامیابی عطا فرمائی تو ان کی ترجیحات ہوں گی۔ وہ نئے وکلاء کو شروع کے تین سال میں ڈاکٹرز کی طرح وظیفہ دلوائیں گے جب کے 60 سے 70 سال کی عمر کو پہنچنے والے بزرگ وکلاء کے لیے بھی وظیفہ کا انتظام کیا جائے گا تیسرے نمبر پر وہ وکلاء کے لیے سپورٹس اور کلچرل ایکٹیویٹیز متعارف کرائیں گے تاکہ ایک تھکا دینے والے کام سے نکل کر تھوڑا محظوظ ہوا جاسکے۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ پنجاب بار کی مشاورت سے حکومت سے بات کریں گے تاکہ سرکاری اراضیوں میں وکلاء کا کوٹہ بھی مختص کیا جائے۔ وکلاء گردی کے واقعات پر انہوں نے رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ وکلاء معتبر پیشے سے تعلق رکھتے ہیں جو شر پسند عناصر لڑائی جھگڑے کے واقعات میں ملوث ہیں ان کا وکالت سے کوئی لینا دینا نہیں ایسے واقعات کی وہ مذمت کرتے ہیں۔ امیدوار وکلاء  اپنا اپنا منشور پیش کرکے ووٹوں کی استدعا بھی کررہے ہیں۔

عزم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -