ضلع ٹھٹھہ میں پام کے درختوں نے ریکارڈ پھل دین شروع کر دیئے 

ضلع ٹھٹھہ میں پام کے درختوں نے ریکارڈ پھل دین شروع کر دیئے 

  

 کراچی (اسٹاف رپورٹر)مشیر ماحولیات و ساحلی ترقی بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہاہے کہ محکمہ ماحولیات،ساحلی ترقی کی جانب سے ضلع ٹھٹھہ میں 50ایکڑ رقبے پر پام کے درخت کاشت کیے گئے تھے، پام کے درختوں نے ریکارڈ پھل دینا شروع کر دیا ہے جس سے یومیہ 2 ٹن پام آئل کی پیداوار ہوگی۔بیرسٹر مرتضی وہاب نے افسران کے ہمراہ ٹھٹھہ میں لگی مِل اور پام آئل فیلڈ کا بھی دورہ کیا، اس دوران مرتضی وہاب کی جانب سے آزمائشی تجربہ کامیاب ہونے پر عملے کو مبارکباد دی گئی۔اس موقع پر انہوں نے پام کی کاشت اور آئل کی پیداوار کو گیم چینجر قرار دیتے ہوئے کہا کہ محکمہ ماحولیات وساحلی ترقی کی پام آئل مل نے پیداوار شروع کر دی ہے، اس پروگرام سے سالانہ اربوں روپے کا زرمبادلہ بچایا جا سکے گا۔انہوں نے کہا کہ سندھ میں کاشت کیے گئے پام اور آئل کی پیداوار کا تجربہ قابل عمل اور کامیاب رہا ہے، پام کے 1100درخت آزمائشی طور پر کاشت کیے گئے تھے، پورے پاکستان کے لیے خوشخبری ہے کہ پام کی کاشت اور آئل کی پیداوار کا تجربہ کامیاب رہا ہے۔بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا کہ پاکستان پام آئل کی درآمد پر سالانہ 4 ارب ڈالر تک زرمبادلہ خرچ کرتا ہے، سندھ حکومت نے پام آئل کے پائلٹ پراجیکٹ کی کامیابی کے بعد کاشت کے لیے مزید زمین مختص کردی ہے، ضلع ٹھٹھہ میں 1500 ایکڑ رقبے پر پام کے مزید درخت کاشت کیے جا رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ تھرکول کے بعد یہ سندھ حکومت کا پام آئل منصوبہ بھی نئی مثال ثابت ہوگا، پام کی کاشت اور آئل کی پیداوار سے ضلع ٹھٹھہ میں بڑی سرمایہ کاری آئے گی اور محکمہ ماحولیات وساحلی ترقی کا پام آئل منصوبہ ہزاروں خاندانوں کے لیے روزگار کا سبب بنے گا۔بیرسٹر مرتضی وہاب  نے کہاکہ پاکستان میں اپنی نوعیت کا یہ واحد اور پہلا منصوبہ ہے، تھر کول کی طرح منصوبے میں مقامی لوگوں کو روزگار فراہم کیا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی کی قیادت اور وزیراعلی سندھ کے ویژن کو پایہ تکمیل تک پہنچایا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -