پیمرا نوٹیفکیشن غیرقانونی ہوتو بھی مفرورکو ریلیف نہیں دے سکتے،اسلام آبادہائیکورٹ کے نوازشریف کی تقاریر پر پابندی کیخلاف درخواست پرریمارکس

پیمرا نوٹیفکیشن غیرقانونی ہوتو بھی مفرورکو ریلیف نہیں دے سکتے،اسلام ...
پیمرا نوٹیفکیشن غیرقانونی ہوتو بھی مفرورکو ریلیف نہیں دے سکتے،اسلام آبادہائیکورٹ کے نوازشریف کی تقاریر پر پابندی کیخلاف درخواست پرریمارکس

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آبادہائیکورٹ نے نوازشریف کی تقاریر پرپابندی کیخلاف صحافیوں کی درخواست پر ریمارکس دیتے ہوئے کہاہے کہ یہ درخواست سادہ نہیں ہے مفرور کی تشریح کردیں ،یہ عدالت کسی مفرور کو ریلیف نہیں دے سکتی ، پیمرا نوٹیفکیشن غیرقانونی ہوتو بھی مفرورکو ریلیف نہیں دے سکتے۔

نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں نوازشریف کی تقاریر پر پابندی کیخلاف صحافیوں کی درخواست پر سماعت ہوئی،درخواست نجم سیٹھی ،سلیم صافی ،نسیم زہرہ،غریدہ فاروقی ،عاصمہ شیزاری، منصور علی خان سمیت چند صحافیوں نے دائر کی،درخواست میں سیکرٹری اطلاعات ،چیئرمین ،جی ایم پیمرا کو فریق بنایاگیاتھا،اسلام آبادہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من نے کیس پر سماعت کی ۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ آپ ریلیف کس کیلئے مانگ رہے ہیں ،پرویز مشرف والے کیس میں ساری چیزیں موجود ہیں،مشرف جب مفرورتھاتوعدالت نے ریلیف نہیں دیا،پیمرا آرڈیننس سیکشن 31 اے کے تحت پیمرا نے نوٹیفکیشن جاری کیا،چینل یا جو فریق متاثر ہے ان کو چاہئے متعلقہ فورم جائیں ،آئین کاآرٹیکل 19 پڑھ لیں ،نوازشریف کا سی این آئی سی ،پاسپورٹ بلاک کیاگیا ہے۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ یہ درخواست سادہ نہیں ہے مفرور کی تشریح کردیں ،یہ عدالت کسی مفرور کو ریلیف نہیں دے سکتی ،آپ نے یہ نہیں سوچاریلیف جتنے بھی مفرور ہیں سب کیلئے ہوگا،مفرور کو عدالتوں پر اعتماد کرناہوگا،عدالت نے کہاکہ پیمرا نوٹیفکیشن غیرقانونی ہوتو بھی مفرورکو ریلیف نہیں دے سکتے،عدالت نے سماعت16 دسمبر تک ملتوی کردی۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -