پنجاب بھر میں27 ماہ سے جاری اینٹی کرپشن مہم کے دوران کتنی ریکوری ہوئی؟وزیر اعلیٰ عثمان بزدار نے حیران کن انکشاف کردیا 

پنجاب بھر میں27 ماہ سے جاری اینٹی کرپشن مہم کے دوران کتنی ریکوری ہوئی؟وزیر ...
پنجاب بھر میں27 ماہ سے جاری اینٹی کرپشن مہم کے دوران کتنی ریکوری ہوئی؟وزیر اعلیٰ عثمان بزدار نے حیران کن انکشاف کردیا 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ صوبے میں اینٹی کرپشن مہم کے دوران صرف 27 ماہ میں مجموعی طور پر 206 ارب روپے سے زائد کی ریکوریاں ہوئیں جوایک ریکارڈ ہے،قومی وسائل لوٹنے والوں کو کسی صورت معاف نہیں کیا جائے گا،ہم نے اینٹی کرپشن ادارے کو ریفارم کیا ہے اور اس کی مثال گزشتہ 70 برس میں نظر نہیں آتی،  پنجاب کے اندر 2 برس کے دوران اینٹی کرپشن مہم کے دور رس ثمرات واضح نظر آ رہے ہیں اور وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں تحریک پاکستان کی حکومت نے اس بااثر مافیا پر پہلی بار ہاتھ ڈالا ہے جس نے گزشتہ 30 برس کے دوران عوام کے وسائل چھینے اور عوام کو بنیادی ضرورتوں سے محروم رکھا،  پنجاب میں اینٹی کرپشن مہم نتیجہ خیز ثابت ہو رہی ہے اور بڑے بڑے مگرمچھوں پر ہاتھ ڈالا گیااور انہیں قانون کی گرفت میں لایا گیا، ناقدین جو کہتے تھے تبدیلی نہیں آئی، میں انہیں بتانا چاہتا ہوں کہ پنجاب بدل رہا ہے اور بدل کر رہے گا۔

وزیراعلیٰ آفس میں وزیراعظم کے مشیر برائے احتساب مرزا شہزاد اکبر کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئےسردارعثمان بزدار نے کہا کہ2 برس کے دوران اینٹی کرپشن کو 51050 شکایات موصول ہوئیں،11488 انکوائریز شروع کی گئیں اور 3185 کیس درج کئے گئے جبکہ 3904 ملزمان کو گرفتار کیا گیا،ہمارے27 ماہ کے دور میں ملزمان سے ریکوری کی صورتحال بھی گزشتہ 10 سال کے مقابلے میں 532 فیصد زائد رہی،گزشتہ 10 برس کے دوران محض43کروڑروپے کی ریکوری ہوئی جبکہ 27 ماہ میں2ارب30کروڑ روپے سے زائد کی ریکوریاں ہوئیں اور یہ تمام رقم سرکاری خزانے میں جمع کرائی گئی ،اسی طرح 27 ماہ کے عرصے کے دوران سرکاری اراضی واگزار کرانے کی شرح گزشتہ 10 سال کے مقابلے میں 6172 فیصد زائد رہی،گزشتہ 10 برس کے دوران صرف 2.6 ارب روپے مالیت کی سرکاری اراضی واگزار کرائی گئی جبکہ ہمارے 27 ماہ کے مختصر دور میں 181 ارب روپے سے زائد مالیت کی سرکاری اراضی واگزار کرائی گئی۔

وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں تحریک انصاف کی حکومت کرپشن کے خلاف زیروٹالرنس کی پالیسی پر عمل پیرا ہے اور پہلی بار اس بااثر طبقے پر ہاتھ ڈالا گیا ہے جو ماضی کے ادوار میں قومی وسائل کی لوٹ مار میں مصروف رہا، ہمارے دور سے قبل اتنی زیادہ ریکوریاں اس لئے نہیں ہوئیں کہ اس وقت کے سیاسی جتھے میں وہی با اثر لوگ شامل تھے جو اہم عہدوں پر فائز رہے اور وہ اداروں کو بھی اپنے زیر اثر رکھتے تھے اور قومی وسائل پر قابض رہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ وسائل صوبے کے عوام کی امانت ہیں اور ہم اس امانت کو دیانتداری کے ساتھ کرپٹ عناصر سے واپس لے کر عوام کو لوٹا رہے ہیں،واپس لئے گئے وسائل عوام کی فلاح و بہبود پر خرچ ہوں گے اور یہی ہمارا منشور ہے،اینٹی کرپشن کی اس خصوصی مہم کا براہ راست فائدہ عوام کو ہوگا اور یہ عوام ہی کی جیت ہے،یہ وسائل احساس جیسے بے مثال پروگرام، صحت انصاف کارڈ جیسے فلاحی منصوبے، پناہ گاہوں جیسے عوامی پروگرام اور دیگر فلاح عامہ کے پروگراموں پر خرچ ہوں گے، پنجاب میں اینٹی کرپشن کی یہ مہم پہلے سے زیادہ زور و شور سے جاری رہے گی۔

وزیراعلیٰ نے میڈیا کے سوال کے جواب میں کہا کہ کورونا کی صورتحال کو مانیٹر کیا جا رہا ہے اور اس ضمن میں پنجاب حکومت اور وفاق کے مابین بہترین کوآرڈینیشن ہے،جس طرح کی صورتحال پیدا ہوگی، اسی طرح کے فیصلے کئے جائیں گے۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہو ں نے کہا کہ اینٹی کرپشن کے ادارے میں سٹاف کی کمی کو پورا کیا جائے گا اور خالی آسامیوں پر بھرتی کی جائے گی۔

مزید :

قومی -