فیس ماسک کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کو دراصل کس طرح روکتے ہیں؟ تازہ تحقیق میں انتہائی حیران کن انکشاف سامنے آگیا

فیس ماسک کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کو دراصل کس طرح روکتے ہیں؟ تازہ تحقیق میں ...
فیس ماسک کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کو دراصل کس طرح روکتے ہیں؟ تازہ تحقیق میں انتہائی حیران کن انکشاف سامنے آگیا

  

کوپن ہیگن(مانیٹرنگ ڈیسک) عام تاثر ہے کہ فیس ماسک پہننے سے آدمی کورونا وائرس سے محفوظ رہتا ہے تاہم اب ڈنمارک کے سائنسدانوں نے اس حوالے سے انتہائی حیران کن انکشاف کر دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں نے تحقیقاتی نتائج میں بتایا ہے کہ فیس ماسک پہننے سے آدمی خود وائرس سے کم محفوظ ہوتا ہے جبکہ وہ خود سے دوسروں کو وائرس لاحق ہونے سے زیادہ محفوظ رکھتا ہے۔ گویا آپ کے فیس ماسک پہننے کا زیادہ فائدہ دوسروں کو پہنچتا ہے۔

اس تحقیق میں سائنسدانوں نے 6ہزار لوگوں کو دو گروپوں میں تقسیم کیا۔ ایک گروپ کو انہوں نے عوامی جگہ پر فیس ماسک پہننے کو کہا جبکہ دوسرے گروپ کو فیس ماسک کے بغیر رہنے کو کہا گیا۔ ایک ماہ بعد پہلے گروپ میں سے 1.8فیصد کو کورونا وائرس لاحق ہوا جبکہ دوسرا گروپ جسے فیس ماسک نہ پہننے کو کہا گیا تھا ان میں سے 2.1فیصد لوگ کورونا وائرس کا شکار ہوئے۔ 

نتائج میں کوپن ہیگن یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے بتایا کہ ممکنہ طور پر فیس ماسک پہننے سے آدمی کو خود وائرس سے محدود تحفظ ملتاہے جبکہ اس کے فیس ماسک پہننے سے دوسرے لوگ اس سے وائرس منتقل ہونے سے زیادہ محفوظ رہتے ہیں۔ سائنسدانوں نے لوگوں کو تلقین کی کہ تمام لوگ فیس ماسک کی پابندی ضرور کریں تاکہ آپ کسی کے فیس ماسک پہننے کی وجہ سے وائرس سے محفوظ رہیں تو دوسرے آپ کے فیس ماسک پہننے کی وجہ سے اس موذی وباءسے بچے رہیں۔

مزید :

کورونا وائرس -