زمیں کی تیز رفتاری نے چاند دور کر دیا

زمیں کی تیز رفتاری نے چاند دور کر دیا
زمیں کی تیز رفتاری نے چاند دور کر دیا

  

لندن(بیورورپورٹ) ہارورڈ یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے ایک نئی تھیوری پیش کی ہے جس کے مطابق چاند کبھی زمین کا حصہ تھا جو کسی دوسرے سیارے سے ٹکرانے کے نتیجے میں وجود میں آگیا۔ سارہ سٹوارٹ اور میتجا نے جو نال میگزین میں جاری رپورٹ میں دونوں سائنسدانوں نے کہا ہے کہ ان کی پیش کردہ نئی تھوری اس بات کی وضاحت کرے گی کہ زمین اور چاند کی مسافت اورکیمسٹری ایک جیسی کیوں ہے۔ نئی تھیوری کے مطابق چاند کے وجود میں آنے کے وقت زمین آج کی نسبت نہایت تیزی سے گردش کررہی تھی۔ اس وقت دن صرف دو یا تین گھنٹے رہتا تھا۔ اتنی تیزی سے گردش کی وجہ سے کسی دوسر ے فلکی جسم کے ساتھ ٹکر کے نتیجے میں چاند وجود میں آگیا ۔بعدازاں زمین سورج کے گرد اپنی مدار اور زمین کے گرد چاند کے مدار کے درمیان کشش ثقال باہمی تعامل کے ذریعے موجود ہ شرح کے گردش پر پہنچ گئے ۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی