نا پ تول کے پیمانوں میں گڑ بڑ عروج پر،وزیز اعلی کا سخت نوٹس

نا پ تول کے پیمانوں میں گڑ بڑ عروج پر،وزیز اعلی کا سخت نوٹس

  



   لاہور (لیاقت کھرل) صوبائی دارالحکومت میں گزشتہ ساڑھے نو ماہ کے دوران مارکیٹوں اور بازاروں میں اوزان و پیمائش کے پیمانوں میں ہیرا پھیری عروج پر رہی، ضلعی انتظامیہ اور محکمہ لیبر کی ٹیموں نے محض ”خانہ پری“ کے طور پر کارروائی کی، وزیراعلیٰ پنجاب کے حکم پر قائم کردہ انسپکشن ٹیم کی رپورٹ نے ”بھانڈا“ پھوڑ دیا۔ وزیراعلیٰ نے ڈی سی او لاہور سے رپورٹ طلب کر لی ہے روزنامہ ”پاکستان“ کو ذرائع نے بتایا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب کو رپورٹ پیش کی گئی ہے کہ لاہور کی مارکیٹوں اور بازاروں میں روز مرہ کی اشیاءکی خریدو فروخت کی قیمتوں کو کنٹرول اور اوزان و پیمائش کے پیمانوں میں ہیرا پھیری کر کے لوٹ مار کی روک تھام میں ڈی سی او لاہور اور محکمہ لیبر کی ٹیمیں مکمل طور پر ناکام چلی آ رہی ہیں اس میں ڈی سی او لاہور کے حکم پر بنائے گئے سپیشل سکواڈ کی کارکردگی بھی نہ ہونے کے برابر رہی ہے جس کے باعث رواں سال مارکیٹوں اور بازاروں میں اوزان و پیمائش کے پیمانوں میں گڑ بڑ کر کے ہونے والی لوٹ مار کی مکمل روک تھام ممکن نہیں ہو سکی اور گزشتہ ساڑھے نو ماہ کے دوران جہاں روزمرہ کی اشیاءکی خریدو فروخت میں بڑے پیمانے پر لوٹ مار کا سلسلہ جاری رہا ہے وہاں اوزان و پیمائش کے پیمانوں میں ہیرا پھیری کر کے بھی شہریوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا گیا ہے۔ اس میں ڈی سی او لاہور کے حکم پر ضلعی افسروں اور محکمہ لیبر کے20افسروں سمیت50سے زائد افسروں اور اہلکاروں پر مشتمل ایک سپیشل سکواڈ بھی بنایا گیا ہے اور اس سپیشل سکواڈ نے بھی محض خانہ پُری کے طور پر کارروائی کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اوزان و پیمائش کے پیمانوں میں گڑ بڑ کی سب سے زیادہ شکایات داتا گنج بخش ٹاﺅن، سمن آباد ٹاﺅن، عزیز بھٹی ٹاﺅن اور راوی ٹاﺅن کے علاقوں میں سامنے آئی ہیں وزیراعلیٰ پنجاب نے پیش ہونے والی رپورٹ پر سخت نوٹس لے لیا ہے اور اس میں ڈی سی او لاہور سے فوری طور پر رپورٹ طلب کر لی ہے جس پر ڈی سی او لاہور نے پرائس کنٹرول مجسٹریٹوں ،ضلعی افسروں اور محکمہ لیبر کی ٹیموں اور سپیشل سکواڈ میں شامل افسروں اور اہلکاروں کے خلاف کارروائی شروع کر دی ہے۔ اس حوالے سے ڈی سی او لاہور کیپٹن(ر) محمد عثمان کا کہنا ہے کہ نااہل اور کوتاہی کے مرتکب افسروں اور اہلکاروں کے خلاف رپورٹ طلب کر لی گئی ہے

مزید : میٹروپولیٹن 1