پیپلزپارٹی کے جلسے کی جھلکیاں

پیپلزپارٹی کے جلسے کی جھلکیاں

  



کراچی (سٹاف رپورٹر ) بلاول بھٹو زرداری کے تیار کردہ خصوصی ٹرک اسٹیج کے آگے کھڑا کیا گیا تھا ۔ ٭ اسٹیج پر دونوں طرف پاکستانی پرچم لہرا رہے تھے اور اسٹیج کے پچھلے دونوں اطراف پیپلز پارٹی کے پرچم تھے ۔ ٭ اسٹیج پر یہ نعرہ تحریر تھا ” نوجوانوں کا ہے یہ نعرہ ، بلاول بھٹو لیڈر ہمارا “ ٭ جلسے میں پیپلز پارٹی پنجاب ، خیبر پختونخوا ، بلوچستان ، آزاد کشمیر ، گلگت بلتستان ، قبالی علاقہ جات کے کارکنوں کے ساتھ ساتھ ذیلی تنظیموں ، خواتین ونگ سندھ ، پیپلز یوتھ ونگ ، پیپلز اسٹوڈنٹ فیڈریشن ، لیبر ونگ ، اقلیتی ونگ ، ڈاکٹرز فورم ، لائرز فورم اور دیگر تنظیموں کے علاوہ بلاول ورکرز آرگنائزیشن کے کارکنوں نے شرکت کی ۔ ٭ جلسہ گاہ کے ارد گرد مختلف صوبوں اور علاقوں کی طرف سے آئے ہوئے رہنماو¿ں کی طرف سے خیر مقدمی بینرز نصب کےے گئے تھے ۔ ٭ جلسہ گاہ میں لوگ پیپلز پارٹی اور ذیلی تنظیموں کے پرچم ، بینرز ، ذوالفقار علی بھٹو ، بے نظیر بھٹو اور بلاول بھٹو کی تصاویر اٹھائے ہوئے تھے ۔ ٭ پیپلز پارٹی کے قائدین کو بلند اسٹیج پر پہنچانے کے لےے لفٹر کرین استعمال کیا گیا ۔ ٭ جلسے کی بہت بڑی تعداد میں ملکی اور غیر ملکی چینلز اور اخبارات کوریج کر رہے تھے ۔ مختلف فنکاروں نے اپنے گیتوں سے جلسے میں سماں باندھ دیا ۔ ٭ جلسے میں ساو¿نڈ سسٹم کے فرائض ڈی جے وسیم ابراہیم نے سنبھالے ہوئے تھے ۔ ٭ جلسے میں شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کی تقریروں کے ریکارڈز بھی چلائے گئے ، جس سے لوگوں میں زبردست جوش و خروش پیدا ہوا ۔ ٭ جلسے کے شرکاءکو کھانا کھلانے کے لےے بے نظیر دسترخوان بھی لگایا گیا تھا ، جہاں سے کارکنوں میں کھانا اور پانی بھی تقسیم کیا گیا ۔ ٭ جلسے گاہ کے باہر سیکڑوں لوگوں کو عارضی روزگار کی سہولت بھی حاصل ہوئی ۔ مختلف کھانے پینے کی اشیاء، جوس اور ٹھنڈے پانی کی بوتلیں فروخت کرنے والوں نے اسٹال لگائے ہوئے تھے ، جہاں بڑی تعداد میں لوگ ان اسٹالوں سے اشیاءخرید رہے تھے ۔ ٭ جلسہ گاہ کے اطراف پیپلز پیرا میڈیکل کی جانب سے طبی کیمپ لگایا گیا تھا ۔ ٭ اسٹیج اور عوام کے درمیان ایک لوہے کی طویل باڑ قائم کی گئی تھی اور اس پر خاردار تار لگائی گئی تھی۔ اس بار کے ساتھ پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی۔٭ اسٹیج کو چاروں طرف سے جانثاراں بینظیر بھٹو اور پولیس کی کمانڈو فورس نے گھیرے میں لیا ہوا تھا۔

مزید : صفحہ اول


loading...