کشمیر پر پاکستان کی شرائط پر مذاکرات ممکن نہیں، سابق بھارتی جرنیل

کشمیر پر پاکستان کی شرائط پر مذاکرات ممکن نہیں، سابق بھارتی جرنیل

  



نئی دہلی (آئی این پی) بھارت کے سابق ڈپٹی چیف آف آرمی سٹاف لیفٹیننٹ جنرل(ر)ر اج کادیان نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر پر بندوق کے سائے میں مذاکرات نہیں ہو سکتے، نہ ہی پاکستان کی شرائط پر بات چیت کی جا سکتی ہے،مسئلہ کشمیر کے حل کےلئے پاکستان پہلے خود اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عملدر آمد کرے ،بھارت پاکستان کے لئے خطرہ نہیں ، بے شک پاکستان منہ توڑ جواب دینے کےلئے تیاررہے ، آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے کوئی نئی بات نہیں کی۔ ہفتہ کو چیف آف آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف کے پی ایم اے کا کول میں پاسنگ آﺅٹ پریڈ سے خطاب پر اپنے رد عمل میں بھارت نے سابق ڈپٹی آرمی چیف نے کہا کہ بھارت پاکستان کے سات مذاکرات کےلئے تیار تھا لیکن پاکستان کی جانب سے بندوقیں چلنا شروع ہو گئیں، پاکستان کو معلوم ہونا چاہیے کہ بندوقوں کے سائے اور پاکستان کی طرف سے عائد کی گئی شرائط پر مذاکرات نہیں کئے جا سکے۔ کادیان نے بھارتی خبر ایجنسی اے این آئی سے گفتگو میں کہا کہ بھارت نے کبھی نہیں کہا کہ وہ کشمیر پر بات چیت کےلئے تیار نہیں ہے لیکن یہ چیز بندوقوں کے سائے میں ہرگز نہیں ہوسکتی۔ انہوں نے کہاکہ چونکہ یہ باہمی تنازع ہے تو ہم اس میز پر بیٹھنے اور پاکستان کے ساتھ مذاکرات کےلئے تیار ہیں اور کشمیر سمیت پاکستان کے ساتھ ہر اس مسئلے پر بات چیت کےلئے تیار ہیں جو پاکستان اور بھارت کی مشکلات سے متعلقہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے آرمی چیف نے کوئی نئی بات نہیں کی۔ بھارت پاکستان کےلئے خطرہ نہیں ہے اور یہاں تک کہ ایل او سی پر بھارت پاکستانی اشتعال انگیزی کے آگے مزاحمت کر رہے ہیں اور جہاں تک مفروضے کی بات ہے کہ پاکستان بھارتی جارحیت کا جواب دینے کےلئے تیار ہے تو بے شک تیار ہیں۔ یہ اچھی بات ہے لیکن ہم پاکستان کےلئے خطرہ نہیں ہیں، استصواب رائے کے حوالے سے کادیان نے کہا کہ پاکستان پہلے اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے تحت عائد کردہ شرائط پر عملدرآمد کےلئے پاکستانی بھول رہے ہیں کہ اقوام متحدہ کی اپریل 1949ءکی قرار دادوں میں کہا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی قرار دادیں بھارت کو اجازت دیتی ہیں کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں سیکیورٹی کےلئے کم سے کم درکار فوج رکھے جب تک کہ استصواب رائے نہیں ہو جاتا، لیکن ایسا نہیں ہوا تو اس کا مقصد ہے پاکستان نے قرار دادوں میں عائد کی گئی شرائط پوری نہیں کیں۔

بھارتی جرنیل

مزید : صفحہ اول


loading...