مسلہ کشمیر حل کئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہو سکتا :آرمی چیف

مسلہ کشمیر حل کئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہو سکتا ...

  



 یبٹ آباد/پی ایم اے کاکول(اے این این) چیف آف آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف نے دو ٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر حل کئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہو سکتا،کشمیر کے مسئلے کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے،پاک فوج کشمیری بھائیوں کے ساتھ کھڑی ہے،کسی بھی جارحیت کامنہ توڑ جواب دیںگے، جیو پولیٹیکل صورتحال اور نان اسٹیٹ ایکٹرز نے پاکستان کو سینٹر اسٹیج پر لاکھڑا کیا،پاکستان نے دہشتگردی کے مکمل خاتمے کا تہیہ کر رکھا ہے،ضرب عضب صرف آپریشن نہیں،نظریہ بن چکا ہے،دہشتگردوں کا نیٹ ورک تباہ کر دیا گیا،خفیہ ادارے دہشتگردی کے خاتمے کےلئے اہم کردار ادا کر رہے ہیں، فاٹا اور ملک میں دیرپا امن کیلئے اسٹیک ہولڈرز اور ریاستی اداروں کو مل کر کام کرنا ہوگا۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول میں پاسنگ آو¿ٹ پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انھوں نے پاس آو¿ٹ ہونے والے کیڈٹس اور ان کے خاندانوں کو مبارکباد پیش کرت ہوئے کہا کہ اس تقریب میں شرکت میرے لئے اعزاز کا باعث ہے۔انھوں نے کہ اکہ پی ایم اے اکیڈمی فوجی تربیت کے حوالے سے دنیا کا بہترین ادارہ ہے،پاس آو¿ٹ ہونے والے1200کیڈٹس میں45کا تعلق دوست ممالک سے ہے۔آج کادن پاس آﺅٹ ہونے والے کیڈٹس کی زندگی کا اہم دن ہے۔ انہوںنے کہاکہ پاک فوج قومی اتحاد اور امید کی علامت ہے ،جنگ ہو یا قدرتی آفات پاک فوج نے ملک اور قوم کی خدمت میں ہمیشہ بڑھ چڑھ کر اپنا کردارادا کیا۔انہوںنے کہاکہ دہشت گردی کے خلاف جنگ ملک سے شدت پسندی سے مکمل خاتمے کے لئے ہے۔دہشت گردی کے خلاف جنگ میں چار ہزار افسران اور جوان شہید ہوئے،ضرب عضب آپریشن نہیں بلکہ نظریہ بن چکا ہے۔ آپریشن ضرب عضب کا مقصد ملک سے دہشت گردوں کامکمل خاتمہ ہے۔دہشت گردوںکا نیٹ ورک تباہ کردیاگیاہے،خفیہ ادارے دہشت گردی کے خاتمے میں اہم کردارادا کررہے ہیں۔ آپریشن ضرب عضب کے متاثرین کو جلد ان کے علاقوںمیں آباد کرینگے ۔ جنرل راحیل شریف نے کہاکہ پاکستان نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیا میں امن کاخواہش مند ہے۔ہم خطے میں استحکام اور دوسرے ملکوںکے ساتھ برابری اور باہمی احترام کی بنیادپر تعلقات چاہتے ہیں ،پاکستان پرامن بقائے باہمی پر یقین رکھتاہے لیکن کسی شک نہیں ہونا چاہیے کہ پاکستان کی مسلح افواج ہر قسم کی جارحیت کا منہ توڑ جواب دینے کی صلاحیت رکھتیں ہیں اور ملک کے دفاع کے لئے ہم کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے۔ ہم نے وطن عزیز کی حفاظت کا بیڑا اٹھایا ہے اور اس مقصد کے لئے ہم اپنی جانوں کو نذرانہ پیش کرنے سے دریغ نہیں کریں گے۔انہوںنے کہاکہ خطے میں پائیدار امن مسئلہ کشمیر کے حل کے ساتھ منسلک ہے۔ مسئلہ کشمیر کا حل کشمیریوں عوام کی امنگوںاور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق ہوناچاہیے۔پاک فوج اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ کھڑی ہے اور ان کے اعتماد کوکسی صورت ٹھیس نہیں پہنچائی جائے گی۔کشمیری عوام کا حق خود ارادیت بین الاقوامی برادری نے تسلیم کررکھا ہے۔پاکستان کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی حمایت کرتا ہے۔ انہوںنے کہاکہ ہمیں یقین ہے کہ افغانستان میں نئی سیاسی قیادت کا اقتدار میں آنا نہ صرف افغانستان بلکہ خطے میں امن واستحکام اور خوشحالی کا باعث بنے گا۔پاک فوج افغان فورسز کی ہر ممکن حمایت جاری رکھے گی۔ آرمی چیف جنرل راحیل شریف کا مزید کہنا تھا کہ جیو پولیٹیکل صورتحال اور نان اسٹیٹ ایکٹرز نے پاکستان کو سینٹر اسٹیج پر لاکھڑا کیا،اس کے نتیجے میں پاکستان کو کئی چیلنجز اور مواقع کا سامنا ہے، اس صورتحال میں پاکستان آرمی پر بھاری ذمے داری عائد ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دعاگو ہیں کہ افغانستان میں امن، استحکام اور خوشحالی آئے، پاک فوج افغان فورسز کی ہرممکن مدد کرے گی، چاہتے ہیں کہ پاکستان دنیا میں اپنا مقام بنائے، جو قائد اعظم کا خواب تھا، فاٹا اور ملک میں دیرپا امن کیلئے اسٹیک ہولڈرز اور ریاستی اداروں کو مل کر کام کرنا ہوگا۔انہوںنے کہاکہ ہم ملک میں جمہوریت کی مضبوطی کے خواہش مند ہیں۔یہ ثابت شدہ حقیقت ہے کہ قانون کی حکمرانی اور جمہوری اقدار کے بغیر ترقی اور خوشحالی کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتا۔آرمی چیف نے فوج میں شامل ہونے والے کیڈٹس کو مبارکباد پیش کی اور کہا کہ امید ہے کہ نئے نواجون دنیا بھر میں پاک فوج کا نام بلند کرنے میں اہم کردار ادا کریں گے اور پاک فوج کے مقاصد کو آگے بڑھائیں گے۔ اس سے قبل پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول میں آرمی چیف جنرل راحیل شریف کو سلامی دی گئی۔نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی کمپنی کو پرچم دیا گیا اور پاس آو¿ٹ ہونے والے کیڈٹس کو اعزازت سے نوازا گیا۔آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے گارڈ آف آنرکا معائنہ کیا۔ پاسنگ آو¿ٹ پریڈ میں 1200کیڈٹس نے پاس آوٹ کیا،جن میں سے 45 کا تعلق دوست ممالک سے ہے۔قبل ازیں راحیل شریف پی ایم کاکول پہنچے تو کمانڈنٹ پی ایم اے نے ان کا استقبال کیا۔

مزید : صفحہ اول


loading...