بھارت میں پٹرولیم مصنوعات کو حکومتی کنٹرول سے آزادی مل گئی

بھارت میں پٹرولیم مصنوعات کو حکومتی کنٹرول سے آزادی مل گئی
بھارت میں پٹرولیم مصنوعات کو حکومتی کنٹرول سے آزادی مل گئی

  



نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت نے ایک طویل تحریک کے بعد پٹرولیم مصنوعات کوحکومتی کنٹرول سے آزاد کردیاہے اور معاشی ماہرین نے فیصلے کو خوش آئند قراردیتے ہوئے کہاہے کہ زبوں حالی کا شکار شعبے میں سرمایہ کاری میں اضافہ اور سرکار کے مالی خسارے میں کمی ہوگی ۔

وزیرخزانہ ارون جیٹلی نے کابینہ اجلاس کے بعد پٹرولیم مصنوعات کو حکومتی کنٹرول سے آزاد کرنے کا اعلان کیااورکہاکہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کا تعلق عالمی مارکیٹ سے ہے اوراُسی حساب سے صارفین کوادائیگی کرناہوگی ، قیمتوں سے متعلق سرکاری سرپرستی میں چلنے والے ادارے فیصلہ کریں گے ۔

اُنہوں نے بتایاکہ فیصلے کے بعد بھی گھریلو استعمال کیلئے گیس اور مٹی کے تیل کی قیمتیں حکومتی کنٹرول میں ہی رہیں گی جس سے عام آدمی کا تعلق ہے ۔

2010ءمیں حکومتی کنٹرول سے آزادی کے بعد گیس کی قیمتوں میں اضافہ دیکھاگیاتاہم کبھی کبھار ہی حکومت کی گذشتہ منظوری کو مدنظر رکھتے ہوئے قیمتوں میں مناسب ردوبدل ہی دیکھنے کوملا ۔

حکومتی فیصلے پر کہاجارہاہے کہ پٹرولیم مصنوعات پر بھاری سبسڈی سے حکومت پر مالی بوجھ میں کمی ہوگی جس سے معیشت کی صورتحال بہترکرنے میں مدد ملے گی ۔

مزید : بزنس


loading...