سمرتی ایرانی کی جعلی ڈگری کے خلاف درخواست مسترد، پٹیشن کا مقصدخاتون وزیر ہراساں کرنا ہے: دلی ہائیکورٹ

سمرتی ایرانی کی جعلی ڈگری کے خلاف درخواست مسترد، پٹیشن کا مقصدخاتون وزیر ...
سمرتی ایرانی کی جعلی ڈگری کے خلاف درخواست مسترد، پٹیشن کا مقصدخاتون وزیر ہراساں کرنا ہے: دلی ہائیکورٹ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نئی دلی (نیوز ڈیسک) دلی ہائیکورٹ نے سابق اداکارہ و موجودہ وزیر ٹیکسٹائل سمرتی ایرانی کے خلاف جعلی ڈگری کی رٹ پٹیشن یہ کہتے ہوئے خارج کردی کہ یہ پٹیشن انہیں بطور وزیر ہراساں کرنے کیلئے دائر کی گئی تھی۔
ٹائمز آف انڈیا کے مطابق میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ ہرویندر سنگھ نے کہا کہ سمرتی ایرانی کے خلاف 11 سال بعد درخواست دائر کی گئی ہے جبکہ 2004 کے الیکشن میں مذکورہ وزیر کی جانب سے جمع کرایا جانے والا حلف نامہ بھی موجود نہیں ہے اس لیے دائر کی جانے والی پٹیشن خارج کردی گئی ہے۔

آئس لینڈ کی خاتون رکن نے پارلیمنٹ سے خطاب کے دوران بھی بچے کو دودھ پلایا
سمرتی ایرانی کے خلاف فری لانس صحافی احمد خان نے جعلی ڈگری کے حوالے سے عدالت میں درخواست دائر کی تھی ۔ درخواست گزار نے اپنی درخواست میں موقف اپنایا تھا کہ سمرتی ایرانی نے الیکشن کمیشن کو 2004، 2011 اور 2014 میں جمع کرائے جانے والے حلف ناموں میں اپنی تعلیمی اہلیت کا غلط اندراج کیا تھا اس لیے انہیں عدالت بلا کر پوچھ گچھ کی جائے۔

شام کے خوبصورت ترین تاریخی مقامات جنگ کے بعد اب کس حالت میں ہیں؟ دیکھ کر آپ کا دل خون کے آنسو روئے گا
فری لانس صحافی کی درخواست کو مسترد کرتے ہوئے دلی ہائیکورٹ نے کہا کہ عدالت کو مطلوبہ شہادتیں نہیں مل سکیںکئی سال گزرنے کی وجہ سے اصل کاغذات گم ہوچکے ہیں ۔سمرتی ایرانی کے خلاف دائر کی جانے والی اس درخواست کا مقصد انہیں بطور وزیر ہراساں کرنا ہے۔ عدالت نے ان ریمارکس کے ساتھ درخواست خارج کردی۔