ایف پی سی سی آئی اور پی ایم ڈی سی کی ے وفد کا کھیوڑہ نمک کان کا دورہ

ایف پی سی سی آئی اور پی ایم ڈی سی کی ے وفد کا کھیوڑہ نمک کان کا دورہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور (کامرس رپورٹر)ایف پی سی سی آئی اور پاکستان منرل ڈویلپمنٹ کارپوریشن( پی ایم ڈی سی) کی باہمی اشتراک سے ’’معدنیات و کان کنی کے شعبہ کی افادیت بارے آگاہی پروگرام ‘‘ کے تحت کاروباری برادری کے وفد نے ایف پی سی سی آئی معدنیات و کان کنی کمیٹی کے چےئرمین راجہ حسن اختر کی زیرقیادت کھیوڑہ نمک کان کا دورہ کیا۔اس موقع پر پی ایم ڈی سی کے ترجمان نے خام مال میں ویلیو ایڈیشن کرنے کے مختلف طریقوں اور نمک کے شعبہ میں سرمایہ کاری اور اس کی افادیت بارے کاروباری برادری کے وفد کو بریفنگ دی۔ اس موقع پر راجہ حسن اختر نے کہاکہ کان کنی کے لئے حکومت ڈیوٹی فری مشینری امپورٹ کرنے کی اجازت دے۔

معدنیات کے سیکٹر سے وابسطہ تاجروں و صنعت کاروں کو بلا سود قرضے کی سہولے فراہم کی جائے۔پاکستان میں موجودہ معدنیات کے ذخائر کو ضائع ہونے سے بچایا جائے۔ انہوں نے کہاکہ ہم جپسم کی ایکسپورٹ بھارت کو52ڈالر فی ٹن پرکر رہے تھے اور اب بھارت نے 17ڈالر سے زیادہ پر لینے سے انکار کر دیا ہے، ریٹ کو مستحکم بنانے کیلئے ریگولیٹری اتھارٹی کا قیام انتہائی ضروری ہے۔ انہوں نے مزید کہاکہ دوسرے ممالک کو ٹریڈ کرکے معدنیات و کان کنی کے ذریعے آمدنی میں اضافے کے لئے حکومت ویلیو ایڈیشن یونٹس کی تنصیب کو یقینی بنائے۔ پرائس ریگولیشن اور سرحد پار تجارت کو دستاویزی معیشت میں شامل کرنے لئے حکومت کوفوری اقدامات کرنیکی ضرورت ہے۔ ریلوے کان کنی کے سکیٹر کوپروموٹ کرنے میں اہم کردار ادا کر سکتا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ دنیا کے بے شمار ترقی یافتہ ممالک جاپان اور چین کے کاٹیج انڈسڑی کی بنیاد پر ہی ترقی کی منازل طے کیں۔

مزید :

کامرس -