چکوال،ن لیگ نے24میں سے22نشستیں غیرسرکاری طورپرجیت لیں

چکوال،ن لیگ نے24میں سے22نشستیں غیرسرکاری طورپرجیت لیں

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


چکوال(ڈسٹرکٹ رپورٹر) ضلع کونسل چکوال کی مخصوص نشستوں پر الیکشن یکطرفہ ضرور ہے اور مسلم لیگ ن نے تقریباً24میں سے 22نشستیں غیر سرکاری طور پر جیت لی ہیں مگر اس وقت خواتین کی 15نشستوں پر 20کاغذات نامزدگی منظور ہوئے ہیں جس کا مطلب یہ ہے کہ پانچ خواتین کو اپنے کاغذات نامزدگی واپس لینے ہونگے اور اگر ان کے پاس ٹکٹ نہیں ہے تو پھر آٹھ نومبر کو انہیں مسلم لیگ ن کی چھری تلے ذبح ہونا ان کا مقدر ہے۔ خواتین کی نشستوں پر اس وقت کاغذات نامزدگی داخل کرانے کی پوزیشن ہے کہ ملک سلیم اقبال گروپ کی طرف سے دو خواتین ثمینہ مصطفی اور حمیرہ محمود نے اپنے کاغذات نامزدگی داخل کرائے ہیں اور دو ہی نشستوں کا ان کو کوٹہ ملا ہے۔ میجر طاہر اقبال کے پاس دو نشستوں کا کوٹہ بتایا جاتا ہے مگر انہوں نے چار امیدوار جن میں مصباح مشتاق ، نیئر فیاض ، کلثوم اختر اور غلام زہرہ کے کاغذات نامزدگی داخل کرائے ہیں ان میں سے دو کو کاغذات واپس لینا ہونگے۔ چوہدری لیاقت علی خان ایم پی اے نے امیر بیگم ساکن چوہان اور امیر بیگم ساکن تترال کے کاغذات داخل کرائے ہیں جبکہ ان کے پاس کوٹہ صرف ایک نشست کا ہے۔ ملک اسلم سیتھی کا کوٹہ ایک نشست کا تھا مگر پتہ چلا ہے کہ کچھ امداد انہیں سردار غلام عباس نے دی ہے جس پر ظل ہماء اور سعدیہ اکرام نے ان کے کوٹے پر کاغذات داخل کرائے ہیں۔ سردار غلام عباس کے پاس 4خواتین کا کوٹہ ہے مگر انہوں نے چھ امیدواروں کے کاغذات داخل کرائے ہیں جن میں سے دو کی واپسی کے امکانات ہیں۔ سردار عباس کی خواتین امیدواروں میں زاہدہ بتول، عنصر یاسمین، نسیم اختر، شائستہ خانم، فریدہ خانم ہیں، سردارممتاز ٹمن اور سردار ذوالفقار دلہہ کے حصے میں کوٹے کے مطابق ایک نشست ہے مگر انہوں نے کلثوم اختر، غزالہ صفدر اور غزالہ پروین کے کاغذات نامزدگی داخل کرائے ہیں۔ پی ٹی آئی اور مسلم لیگ ق کی ایک ایک نشست ہے لہٰذا انہوں نے ثمینہ خضر اور ثریا بیگم کی شکل میں اپنے امیدوار میدان میں اتارے ہیں۔