یونیسکو میں بیت المقدس پر عرب ممالک کی قرارداد منظور،اسرائیل کا واویلا

یونیسکو میں بیت المقدس پر عرب ممالک کی قرارداد منظور،اسرائیل کا واویلا
یونیسکو میں بیت المقدس پر عرب ممالک کی قرارداد منظور،اسرائیل کا واویلا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نیو یارک(مانیٹرنگ ڈیسک) اقوام متحدہ کے ثقافتی ادارے یونیسکو نے بیت المقدس کے حوالے سے عرب ممالک کی قرارداد منظور کرلی ہے، یونیسکو کے ایگزیکٹو بورڈ کی جانب سے منظور کی گئی قرار داد میں قرارداد میں بیت المقدس کو صرف اس کے اسلامی ناموں سے یاد کیا گیا ہے۔ مسلمان اسے 'حرم الشریف‘ یا ’بیت المقدس' کے ناموں سے پکارتے ہیں جبکہ یہودی اسے 'ٹمپل ماؤنٹ' کہتے ہیں۔

اس قرارداد کے سبب گذشتہ ہفتے اسرائیل نے یونیسکو سے اپنے سارے رابطے بھی ختم کردیئے تھے۔عرب ممال کی قرارداد کا مقصد فلسطین کے ثقافتی ورثے اور مشرقی یروشلم کے مخصوص کردار کو بچانا تھا، قرارداد میں یروشلم اور مقبوضہ غرب اردن کے مقدس مقامات پر اسرائیل کی سرگرمیوں پر تنقید بھی کی گئی ہے۔ یونیسکو میں فلسطین کے نائب سفیر منیر انستاس نے قرارداد کی منظوری کا خیرمقدم کیا جبکہ اسرائیل نے اس اقدام پر شدید تنقید کی ہے۔