اس مسجد کے لوگ 37سال سے غلط سمت میں نماز پڑھ رہے تھے، پتا کیسے چلا؟ جانئے

اس مسجد کے لوگ 37سال سے غلط سمت میں نماز پڑھ رہے تھے، پتا کیسے چلا؟ جانئے
اس مسجد کے لوگ 37سال سے غلط سمت میں نماز پڑھ رہے تھے، پتا کیسے چلا؟ جانئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

انقرہ(مانیٹرنگ ڈیسک)دنیا میں شاید ہی کوئی مسلمان ہو جسے یہ بات معلوم نہ ہو کہ اس کے علاقے میں قبلہ کا رخ کون سا ہے مگر مغربی ترکی کے ایک گاؤں کے باسیوں نے لاعلمی کی حد ہی کر دی، گزشتہ 37 سال سے یہ لوگ غلط جانب رخ کر کے نماز پڑھ رہے تھے۔ یہ حیرتناک انکشاف اس وقت سامنے آیا جب حال ہی میں اس گاؤں میں ایک نئے امام مسجد کی تعیناتی ہوئی۔
ویب سائٹ حریت ڈیلی نیوز کے مطابق یالووا صوبے کے گاؤں سگورن میں مسجد کی تعمیر 1981 میں کی گئی مگر بدقسمتی سے محراب غلط رخ میں تعمیر کر دی گئی۔ گاؤں والوں کو اس غلطی کا احساس نہیں ہوا 37 سال تک مسجد میں اسی طرح نماز کی ادائیگی کی جاتی رہی۔ حال ہی میں مسجد میں نئے امام کی تعیناتی ہوئی تو اس نے قبلہ رخ کے متعلق شکوک و شبہات سامنے آنے پر سرکاری مفتی کے دفتر سے رابطہ کیا۔ مفتی کے دفتر کی جانب سے ایک ٹیم گاؤں میں بھیجی گی جس نے معائنہ کیا تو معلوم ہوا کہ واقعی محراب کا رخ درست نہیں تھا۔
یہ انکشاف سامنے آنے کے بعد سوال پیدا ہوا کہ اب کیا کیا جائے۔ پہلے تو مسجد کے کچھ حصوں کو مسمار کر کے درستی کی بات ہوئی مگر بعد ازاں اس بات پر اتفاق ہوا کہ مسجد میں بچھے قالین پر قبلہ رخ کے مطابق لکیریں کھینچ دی جائیں۔ اس تجویز پر عمل کیا گیا اور اب تقریباً چار دہائیاں بعد پہلی بار اس گاؤں کے باسی درست سمت میں رخ کر کے نماز کی ادائیگی کر رہے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -