گوجرہ، نوجوان کا اغواغیر قانونی حراست میں بہیمانہ تشددتھا، نیدارکیخلاف مقدمہ درج 

    گوجرہ، نوجوان کا اغواغیر قانونی حراست میں بہیمانہ تشددتھا، نیدارکیخلاف ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


گوجرہ (نمائندہ خصوصی) طمعہ نفسانی کی خاطر نوجوان کو زبردستی اغوا کر کے تھانہ صدر گوجرہ میں محبوس رکھنے اور اس پر بہیمانہ تشدد کرنے والا لالچی تھانیدار قانون کی زد میں آگیا جس کے خلاف اندارج مقدمہ کا حکم دے دیا گیا ہے، چک نمبر375ج ب ٹوبہ کے غلام صابر کی بیٹی ریحانہ کوثر کی شادی تقریبا 8 سال قبل گوجرہ کے نواحی چک نمبر 367ج ب جلیانوالہ کے محمد عباس کے ساتھ ہوئی تھی میاں بیوی کے مابین نا چاقی پیدا ہو گئی جس پر خاتون ریحانہ کوثر نے اپنے خاوند کے گھر آباد ہونے سے معذوری ظاہر کر دیاور میکے چلی گئی اس کے خاوند محمد عباس نے مصالحت کے لئے تھانہ صدر گوجرہ کے ایک تھانیدار اسسٹنٹ سب انسپکٹر محمد نوید کی خدمات حاصل کر لیں تھانیدار مذکور نے خاتون ریحانہ کو ثر کے بھائی فاروق احمد کے گھر پر چھاپہ مار کر زبردستی اسے اغوا کر لیا اور تھانہ صدر گوجرہ لا کر اسے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے غیر قانونی طور پر تھانہ ہذا کی حوالات میں بند کر دیاجس کے خلاف کوئی مقدمہ وغیرہ درج نہ تھا تھانیدار مذکور اس پر تشدد کرتا رہامحبوس نوجوان فاروق احمد کے والد نے اسے رہائی دلانے کے لئے جدوجہد کی اور تھانیدار کی منت سماجت کی مگر وہ اپنی ہٹ دھرمی پر قائم رہا جس سے مایوس ہو کر محبوس کے والد غلام صابر نے تحریری طور پر ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ٹوبہ ٹیک سنگھ وقار قریشی سے رجوع کیااور تمام حالات زبانی بھی گوش گزار کئے ڈی پی او ٹوبہ ٹیک سنگھ نے تھانیدار مذکور کی سرزنش کرتے ہوئے اس کی قید سے محبوس فاروق کو رہائی دلائی اور تھانیدار محمد نوید کے اس غیر قانونی اقدام کی انکوائری کے لئے ڈی ایس پی آرگنائزڈ کرائم ٹوبہ ٹیک سنگھ خرم سعید کو مامور کرتے ہوئے رپورٹ طلب کی ڈی ایس پی مذکور نے بعد از انکوائری تھانیدار محمد نوید کو اس سلسلہ میں قصوروار قرار دیتے ہوئے رپورٹ پیش کر دی اس دوران صدر پولیس گوجرہ نے اپنے پیٹی بھائی محمد نوید کو بچانے کی ٹھان لی اور نوید کے خلاف درخواست دہندہ اور ان کے بیٹوں کو چوری کے مقدمہ میں نامزد کر دیا ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ٹوبہ ٹیک سنگھ وقار قریشی کی مداخلت پر تھانہ صدر گوجرہ کی حوالات سے رہا کئے گئے محبوس فاروق احمد کو دوبارہ بھائی مسعود سمیت گرفتار کر لیا اور ان کا جسمانی ریمانڈ بھی حاصل کر لیا جس کا تفتیشی آفیسر اسسٹنٹ سب انسپکٹر ارشاد الحق بنایا گیا ہے جس نے 28اگست کے مبینہ وقوعہ چوری کے مقدمہ نمبر569/19کا اندراج11 اکتوبر کو کیا تاہم پولیس صدر گوجرہ اسسٹنٹ سب انسپکٹر محمد نوید کو مقدمہ سے بچانے میں کامیاب نہیں ہو سکی جس کے خلاف تھانہ سٹی گوجرہ میں مقدمہ نمبر766/19زیر دفعہ155Cپولیس آرڈر 2002کے تحت  درج ہو گیا ہے تاہم ابھی تک اسسٹنٹ سب انسپکٹر محمد نوید کو معطل کئے جانے کی کوئی اطلاع موصول نہ ہوسکی ہے اور نہ ہی تاحال تھانیدار مذکور کی گرفتاری عمل میں لائی جا سکی ہے ملزم تھانیدار دندناتا پھر رہا ہے جو اعلی پولیس حکام کے لئے لمحہ فکریہ ہے۔
مقدمہ درج

مزید :

علاقائی -