صحرائی حوکسٹ فصلات کے لئے بڑا خطرناک ہے،ڈاکٹر دل فیاض

صحرائی حوکسٹ فصلات کے لئے بڑا خطرناک ہے،ڈاکٹر دل فیاض

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
سرائے نورنگ(نمائندہ پاکستان)زرعی ریسرچ اینڈ اسٹیشن نورنگ کے ڈائریکٹرڈاکٹر دل فیاض نے کہاہے کہ صحرائی حوکسٹ فصلات کے لئے بڑا خطرناک ہے یہ ٹڈی کی ایک قسم ہے یہ چھوٹے سینگوں اور اڑنے والا پرندہ ہے یہ حشرات کی خطرناک خاندان سے تعلق رکھتا ہے‘گذشتہ روزاپنے دفترمیں صحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ یہ ٹڈی بہت سے علاقوں میں زرعی پیداوار اور فصلات کے لئے ایک بڑا خطرہ ہے یہ دوسرے ممالک جیسے جنوبی افریقہ مشرق وسطیٰ اور ایشیا میں فصلات کے لئے کئی سالوں تک بڑا خطرہ رہاہے یہ اتنا خطرناک ہے کہ دنیا کی آبادی کے دسویں حصے کے لئے خوراک اور زندگی کا مسئلہ پیدا کر رہا ہے اور اس نے لوگوں کی زندگی براہ راست متاثر کی ہے یہ ٹڈی کی دوسری نسلوں سے بہت زیادہ خطرناک ہے اس میں ایک جگہ سے دوسری جگہ تک اُڑنے کی صلاحیت موجود ہے یہ سال میں دو سے تین نسلوں پڑھا سکتا ہے یہ ہوا کے ساتھ ہوا کی رفتار سے سے چل سکتا ہے یہ دن میں سو سے دو سو کلومیٹر کا سفر طے کر سکتا ہے یہ سطح سمندر سے 2000 میٹر اونچائی تک اڑ سکتا ہے اس لئے کھڑا ان علاقوں میں نہیں جاسکتا جن کے درمیان دو ہزار میٹر سے پہاڑ ہوں اس کے نقصانات کا اگر تذکرہ کیا جائے تو یہ دن میں اپنی وزن کے برابر سبز فصلات کو اپنی خوراک کے طور پر استعمال کرتا ہے یہ گندم ہم جوار چاول گنّا باجرا سبزیوں اور گھاس اور میوہ جات کے ساتھ ساتھ ہاتھ دھو کو بھی نقصان پہنچاتا ہے اس لئے یہ انسانوں کے خوراک پر براہ راست حملہ ہے چونکہ یہ جسامت میں بڑا اور اڑنے والا کیڑا ہے اس لیے پہلے ہی سے اس کی حفاظت کی تدا روک کے لئے منصوبہ بندی اختیار کرنی چاہیے تاکہ یہ دوسرے علاقوں سے آکر کر پھیل جائے۔