”مارچ “ کے دوران گرفتار یاں حکومتی تابوت میں آخری کیل ہوگی 

    ”مارچ “ کے دوران گرفتار یاں حکومتی تابوت میں آخری کیل ہوگی 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 بٹ خیلہ (بیورورپورٹ)جمعےت علماءاسلام کے زیر اہتمام آزادی مارچ میں ملاکنڈ کے تما م سیاسی جماعتوں ، تاجر تنظےمیں اور گرینڈ اصلاحی جرگے کے ممبران شرکت کرےنگے ۔ملاکنڈ کے تمام سیاسی جماعتوں ، ٹریڈ یونین کے عہدیداروں اور اصلاحی آمن جرگہ نے جمعےت علماءاسلام کے آزادی مارچ کے حماےت کا اعلان کردیا ۔ کارکنوں کی گرفتاری حکومت کے تابوت میں آخری کیل ثابت ہوگی ۔ سلیکٹڈ حکومت نے عوام کے مسائل حل کرنے کی بجائے انہیں مسائل کے دلدل میں دھکیل دیا ہے ۔جمعےت علماءاسلام کے زیر اہتمام اسلام آباد آزادی مارچ کے حوالے سے جمعےت علماءاسلام ملاکنڈ کے زیر انتظام سخاکوٹ میں آل پارٹےز کانفرنس زیر صدارت ضلعی آمیر مفتی کفاےت اﷲ منعقد ہوئی جس میں اپوزیشن پارٹےوں کے تمام ضلعی و تحصیل قےادت ، گرےنڈ اصلاحہ جرگہ کے ممبران اور تاجر تنظیموں کے عہدےداروںنے شرکت کی ۔ آل پارٹےز کانفرنس سے جمعےت علماءاسلام کے ضلعی آمیر مفتی کفاےت اﷲ ، جنرل سیکرٹری مولانا سلمان تاثےر خان ،پی پی پی کے سابق ممبر صوبائی اسمبلی سید محمد علی شاہ باچہ ، عوامی نشنل پارٹی کے ضلعی جنرل سیکرٹری محمد ارشاد خان مہمند ، مسلم لیگ ن کے ضلعی صدر سجاد خان ، جنرل سیکرٹری گل زمان خان ، الحاج محمد ایصال خان ،پختونخواہ ملی عوامی پارٹی کے ضلعی صدر و متحدہ ٹرےڈ یونین سخاکوٹ کے صدر حمید خان لالا ، درگئی ٹرےڈ یونین کے جنرل سیکرٹری حاجی غلام حسن ،، حق آواز تنظیم کے چےئرمین صدام خان ، گرےنڈ اصلاحی جرگہ کے صدر حاجی اکرم خان ، سابق ممبر ضلع کونسل فرید اﷲ خان سمےت دےگر مقررین نے خطاب کیا ۔اے پی سی کے موقع پر متفقہ اور مشترکہ اعلامےے میں کہا گےا کہ کہ اگر پُر آمن آزادی مارچ میں شرکت کرنے والے کارکنوں کو گرفتار کیا گےایا ان پر تشدد کیا گےا تو کسی بھی نا خوشگوار واقعے کی ذمہ داری حکومت پر عائد ہو گی اور گرفتارےوں کے خلاف ہر ضلع میں احتجاجی دھرنے دےنگے اور روڈ ز بلاک کرےنگے ۔انہوں نے کہا کہ تمام سیاسی جماعتےں ، تاجر تنظیمیں اور اصلاحی جرگہ آزادی مارچ کی حماےت کرتے ہوئے اس میں بھر پور شرکت کریگی اور ملاکنڈ سے تمام پارٹےاں اکھٹے ہو کر اسلام آباد مارچ کے لئے روانہ ہونگے کیونکہ پُر آمن احتجاج ہمار ا آئےنی حق ہے اور یہ اے پی سی کا مشترکہ فیصلہ ہے اور اس کے لئے ایک رہبر کمیٹی بنائی جائےگی ۔آل پارٹےز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جمعےت علما ءاسلام کے ضلعی آمیر مفتی کفاےت اﷲ نے کہا کہ انتقامی سیاست کا فی الفور خاتمہ کیا جائے اور ریاستی اداروں کو حکومت اپنے ذات کے لئے نہیں بلکہ ملک کے عوام کے تحفظ کے لئے استعمال کریں اور سیاسی بنیادوں پر بنائے گئے کیسوں کا خاتمہ کیا جائے ۔ سابق ایم پی اے سید محمد علی شاہ باچہ نے کہا کہ ملاکنڈ انتظامیہ کارکنوں کو ڈرانے دھمکانے اور گرفتارکرنے سے باز رہیں بصورت دےگر کسی بھی ناخوشگوار واقعے کی ذمہ داری انتظامیہ پرہوگی ۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ دور ملکی تاریخ کا ایک تاریک دور ہے اور ملک و قوم کےساتھ جتنے مظالم اس دور حکومت میں ہوئے ہیں اتنے کسی ڈکٹےٹر کے دور میں بھی نہیں ہوئے ۔ انہوں نے کہا کہ 126دن دھرنے والے اب پُر آمن احتجاج کا راستہ روکنے کی کوشش کر رہے ہیں حالانکہ 126دن دھرنے میں سول نافرمانی کا اعلان کیا گےا ،بجلی و گےس کے بل جلا کر ان کے آدائےگی سے انکار کیا گےا ، وزیرا عظم ہاﺅس ، پی ٹی وی آفس پر حملے کئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ سلیکٹڈ حکومت کے خاتمے اور آزادی مارچ کے کامیابی کے لئے پی پی پی کے کارکن جمعےت علماءاسلام سے بھی کئی قدم آگے ہونگے ۔اس موقع پر متحدہ ٹرےڈ یونین کے صدر حمید خان لالا نے مارچ والے دن مکمل شٹرڈاﺅن کرنے کے لئے تاجر تنظےموں سے رابطوں کا اعلان کیا ۔اے پی سی سے خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے گل زمان خان ، سجاد خان اور الحاج محمد ایصال خان نے کہا کہ مسلم لیگ ن نے کبھی ظالموں کے سامنے سر نہیں جھکایا اور اب بھی سلیکٹڈ حکومت کے خاتمے کے لئے صف اول میں کھڑے ہونگے ۔ عوامی نشنل پارٹی کے محمد ارشاد خان مہمند نے کہا کہ آج ملک تباہی کے دھانے پر پہنچ گےا ہے اس لئے عوامی نشنل پارٹی غےر جمہوری حکومت کے خاتمے کے لئے جمہوری جماعتوں کا ساتھ دیگی کیونکہ موجودہ حکومت نے نوجوانوں کو اخلاقی طور پر تباہ کیا ہے جبکہ ناقص پالیسیوں کی وجہ سے ملک کو عالمی اور اندرونی طور پر تنہا کیا جارہا ہے ۔ اس موقع پر ٹریڈ یونین کے صدر حمید خان لالا ، حاجی غلام حسن اور اصلاحی جرگہ کے صدر حاجی اکرم خان نے آزادی مارچ کے مکمل حماےت کا اعلان کیا ۔حمید خان لالا نے کہا کہ ملک کے تمام ادارے ناکامی سے دوچار ہیں اس لئے پختونخواہ ملی عوامی پارٹی الیکشن سمےت تمام سیاسی اُمور پر ادارو ں کے مداخلت کی بھر پور مخالفت کریگی ۔ انہوں نے کہا کہ میاں نواز شریف سمےت دےگر سیاسی قائدین پر بنائے گئے مقدمات سیاسی انتقام ہے ۔ ٹرےڈ یونین کے صدر نے 27اکتوبر کو مکمل شٹرڈاﺅن کی بھی تجویز دیکر تاجر تنظیموں سے رابطوں کا اعلان کیا ۔