”گزشتہ رات ملاقات میں مولانا فضل الرحمان مجھے تھوڑا بیک فٹ پر محسوس ہوئے کیونکہ۔۔“سینئر صحافی نے حیران کن بات کہہ دی

”گزشتہ رات ملاقات میں مولانا فضل الرحمان مجھے تھوڑا بیک فٹ پر محسوس ہوئے ...
”گزشتہ رات ملاقات میں مولانا فضل الرحمان مجھے تھوڑا بیک فٹ پر محسوس ہوئے کیونکہ۔۔“سینئر صحافی نے حیران کن بات کہہ دی

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )سینئر صحافی و کالم نگار محسن گورایہ نے آج ایک کالم شائع کیا ہے جس میں انہوں نے مولانا فضل الرحمان کے ساتھ ہونے والی ملاقات کا احوال بیان کیاہے جو کہ ایک تقریب کے دوران ہوئی ۔

تفصیلات کے مطابق صحافی محسن گورایا کا کہناتھا کہ ساﺅتھ ایشین فری میڈیا ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹر ی اور صحافی امتیاز عالم نے مولانا فضل الرحمان کے اعزاز عشائیے کا اہتمام کیا جہاں ان کی باتیں سننے کا بھی موقع مل گیا ۔صحافی کا اپنی تحریر میں کہناتھا کہ گزشتہ رات مجھے وہ تھوڑا سا بیک فٹ پر محسوس ہوئے، وہ اسٹیبلشمنٹ سے اپنا حق ضرور چاہتے ہیں مگر اداروں سے لڑنا بھی نہیں چاہتے۔ ان کے آزادی مارچ کے اعلان کے بعد حکومت اور اپوزیشن دونوں سوچ و فکر کے سمندر میں غوطہ زن ہیں اگرچہ حکومتی عہدیدار اسے کوئی اہمیت نہیں دے رہے، اپنے بیانات میں وفاقی وزراءآزادی مارچ کو غیر اہم قرار دیتے رہتے ہیں، تاہم ان کو اس حوالے سے فکر و پریشانی دامن گیر ضرورہے۔ آزادی مارچ ان کے لئے درد سر بنا ہوا ہے حالانکہ دھرنے اور لاک ڈاو¿ن کے حوالے سے مولانا ایکسٹریم پر جانے کو تیار نہیں،انہیں اپنے ورکرز کا بھی خیال ہے۔

محسن گورایا کے مطابق ان کا یہ کہنا تھا کہ ابھی انکی تمام توجہ آزادی مارچ پر ہے اس کے بعد آئندہ حکمت عملی کا اعلان کیا جائے گا، اس کے باوجود جے یو آئی (ف) تنہا جس بڑے پیمانے پر آزادی مارچ کی تیاریوں میں مصروف ہے اس کے پیش نظر امن و امان کا مسئلہ پیدا ہو سکتا ہے جسے لے کر اسلام آباد کے حکمرانوں کی پیشانی شکن آود ہے۔ اسلام آباد پولیس، ضلعی انتظامیہ تو اپنے طور تیاری میں مصروف ہے ہی مگر راولپنڈی، جہلم، چکوال، اٹک کی پولیس اور ضلعی انتظامیہ کو بھی آزادی مارچ کے حوالے سے تیار رہنے کے احکامات صادر کر دیئے گئے ہیں۔

مزید : قومی