نوازشریف نیب کی حراست میں پولیس اہلکاروں سے کیا پوچھتے رہتے ہیں ؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

نوازشریف نیب کی حراست میں پولیس اہلکاروں سے کیا پوچھتے رہتے ہیں ؟ تفصیلات ...
نوازشریف نیب کی حراست میں پولیس اہلکاروں سے کیا پوچھتے رہتے ہیں ؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )سابق وزیراعظم نوازشریف اس وقت نیب کی حراست میں ہیں جہاں ان سے چوہدری شوگر ملز کیس میں تفتیش کی جارہی ہے تاہم اس دوران انہیں تمام سہولتیں بھی دی گئیں لیکن ٹی وی یا اخبار ان کو فراہم نہیں کیا گیاہے جس کے باعث وہ حالات حاضرہ سے زیادہ واقف نہیں ہیں ۔

نجی ویب سائٹ ” پاکستان 24“ نے ایک رپورٹ شائع کی ہے جس میں نوازشریف کی نیب کے زیر حراست تفتیش اور روزمرہ کی روٹین کے بارے میں بتایا گیاہے ۔ رپورٹ کے مطابق نوازشریف کے پاس ٹی وی اخبار کی سہولت نہیں ہے جس کے باعث وہ حالات سے باخبر رہنے کیلئے پولیس اہلکاروں سے اس بارے میں سوالات کر تے رہتے ہیں اور صورتحال جاننے کی کوشش کرتے ہیں ۔

ویب سائٹ کے مطابق نوازشریف نے پولیس اہلکاروں سے سوال کیا کہ احتساب عدالت میں دیا گیا میرا بیان ٹی وی پر اور اخباروں پر شائع ہواہے ؟ جس پر پولیس اہلکاروں نے بتایا کہ جی کچھ خاص کوریج نہیں دی گئی ۔ نوازشریف نے اگلا سوال پوچھا کہ کیا میرے شہباز شریف اور مولانا کو جیل سے لکھے گئے خط کا تذکرہ ہو رہاہے ؟ جس پر اہلکاروں نے انہیں بتایا کہ اس خط کا چرچا میڈیا میں بہت زیادہ رہاہے ۔ نوازشریف اہلکاروں کی یہ بات سن کر مسکرانے لگے ۔

نیب ٹیم نے دوران تفتیش نوازشریف سے پوچھا کہ ٹی ٹی کی رقم کس کی ہے؟جس پر انہوں نے کہا کہ عباس شریف کے علم میں تھا۔ نیب اہلکار نے سوال کیا کہ مبینہ منی لانڈرنگ کی رقم کے ذرائع آمدن کیاہیں ؟ جس پر نوازشریف نے جواب دیا کہ میں سیاست میں مصروف رہا، میرے علم میں نہیں۔نیب ٹیم نے نواز شریف سے پوچھا کہ لند ن فلیٹس آپ کے بقول بچوں کے ہیں، مگر شوگر ملز کے شیئر تو آپ کے نام ہیں اور آپ کے ذرائع آمدن سے مطابقت نہیں رکھتے، اس پر کیا کہیں گے؟ سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ یہ کوئی اندرونی سیٹلمنٹ ہوگی اور ہمارے اکاوئنٹنٹ کے علم میں ہوگا، میں کاروباری معاملات سے ہمیشہ دور رہااور ان باتوں کا جواب یوسف عباس بہتر دے سکتے ہیں۔

مزید : قومی